والدین کیلئے خوشخبری، عدالت نےنجی سکولز کی فیسوں سے متعلق بڑا فیصلہ سنادیا گیا

والدین کیلئے خوشخبری، عدالت نےنجی سکولز کی فیسوں سے متعلق بڑا فیصلہ سنادیا گیا


اسلام آباد( 24نیوز ) سپریم کورٹ نے نجی سکولوں کی فیسوں میں 2017 کے بعد کیا گیا اضافہ کالعدم قرار دے دیا۔

تفصیلات کے مطابقنجی سکولوں کےلیے بڑا عدالتی حکم آگیا، سپریم کورٹ نے فیسوں سے متعلق 69 صفحات پرمشتمل فیصلہ جاری کردیا،جسے جسٹس اعجازالاحسن نے تحریر کیا ہے،فیصلے میں کہا گیا کہ فیس وہی ہوگی جوجنوری2017 میں تھی،فیسوں میں 20 فیصد کمی والدین سے ریکورنہیں کی جائے گی۔

نجی سکول قانون کے مطابق فیسوں کا دوبارہ تعین کریں، فیس کی ری کیلکولیشن کی نگرانی متعلقہ ریگولیٹری اتھارٹی کرے،جسٹس فیصل عرب نےاپنے اختلافی نوٹ میں لکھا کہ فیسوں میں سالانہ 5 فیصد اضافے کی حد مقرر کرنا مناسب نہیں،سالانہ 8 فیصد اضافہ زمینی حقائق سے مطابقت رکھتا ہے،اتھارٹی کو بتائے بغیر8 فیصد اضافہ ہونا چاہیے۔

جسٹس فیصل عرب نے یہ بھی لکھا ہے کہ نجی سکولوں کا تعلیمی معیار سرکاری سکولوں سے بہترہے،جس وجہ سے ان کی فیس بھی ہینڈسم ہے.

شفقت محمود کا کہنا تھا کہ فیس کے علاوہ بھی والدین پر بوجھ ڈالا جاتا ہے،پرائیویٹ سکولزکی انتظامیہ احتجاج کرنے والے والدین سے مذاکرات کرے۔

عدالت نے تمام دلائل سننے کے بعد فیسوں کو جنوری 2017 کی تاریخ تک منجمد کرتے ہوئے حکم دیا کہ لی گئی اضافی فیس آئندہ فیس میں ایڈجسٹ کی جائے، جسٹس فیصل عرب نے اختلافی نوٹ لکھا ۔