طنز و مزاح کے شہنشاہ لہری کو بچھڑے 7برس بیت گئے

طنز و مزاح کے شہنشاہ لہری کو بچھڑے 7برس بیت گئے


لاہور(24 نیوز)طنز و مزاح کے شہنشاہ اورعظیم اداکار لہری کو دنیا سے بچھڑے 7 برس بیت گئے۔ورسٹائل اداکار نےساڑھے تین دہائیوں تک فلمی دنیا پر راج کیا۔ ان کی یادیں اورکردار آج بھی مداحوں کے ذہنوں پرنقش ہیں۔

دوجنوری 1929 کو بھارت کے شہر کانپور میں آنکھ کھولنے والے سفیر اللہ صدیقی تقسیم ہند کے بعد کراچی آئے،جہاں انہوں نے ریڈیو اور اسٹیج کی تماشائی دنیا سے کیریئر کا آغاز کیا۔

اداکاری کا شوق انہیں پھر فلمی دنیا میں لے آیا،1965 میں ریلیز ہوئی انکی پہلی فلم انوکھی سے انکی کامیابی کا سفر شروع ہوا ،جس کے بعد سفیر اللہ صدیقی لہری بن گئے۔

لہری چہروں پر مسکان بکھیرتے مزاحیہ جملے ایسے ادا کرتے کہ ہر کوئی ان کا دیوانہ بن جاتا،ورسٹائل اداکار نےساڑھے تین دہائیوں تک فلمی دنیا پر راج کی۔انہوں نے کم و بیش 220 سے زائد فلموں میں مزاحیہ اداکاری کے جوہر دکھائے۔ گیارہ نگار ایوارڈزبھی حاصل کیا۔لہری نے بڑھاپے کی دہلیز پر قدم رکھا تو انہیں فالج نے آگھیرا،پھر 13 ستمبر 2012ء کو فلم انڈسٹری کا چراغ 83 برس کی عمر میں بجھ گیا۔