تحریک انصاف نے سیاست کی کریز پر ن لیگ کے چھکے چھڑا دیئے


شیخوپورہ (24نیوز) پاکستان مسلم لیگ ن کے ممبر قومی اسمبلی بلال ورک نے پھر پارٹی بدل لی۔ بار بار انکار کے باوجود تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کر لی۔

24نیوز کے مطابق 2018 میں بھی شیخوپورہ کے ایم این اے بلال ورک نے پارٹی بدلنے کی روایت نہ بدلی۔ اب کی بار وہ پی ٹی آئی کو پیارے ہو گئے۔

بلال ورک کون ہیں؟

بلال ورک کا خاندان پیپلزپارٹی سے وابستہ رہا۔ ان کے تایا توکل اللہ ورک پیپلز پارٹی کے ٹکٹ پر ایم این اے منتخب ہوئے۔ بلال ورک نے سیاست ق لیگ کے پلیٹ فارم سے شروع کی اور ایم این اے منتخب ہوئے۔

منظور وٹو کے داماد بلال ورک نے ق لیگ چھوڑ کر ن لیگ میں شمولیت اختیار کی اور اسی جماعت کے ٹکٹ پر دوبار ایم این اے منتخب ہوئے۔

چند ہفتے پہلے جب بلال ورک کے پی ٹی آئی سے رابطوں کی خبریں سامنے آئیں تو خود انہوں نے ایسی خبروں کو اپنے خلاف سازش قرار دیا۔

بلال ورک کے اس دوٹوک مؤقف کے باوجود کچھ روز بعد ہی انہوں نے پی ٹی آئی میں شمولیت کا باقاعدہ اعلان کردیا۔عمران خان سے ملاقات کے دوران ان کی خوشی دیدنی تھی۔ سیاسی مبصرین کا کہنا ہے کہ اپنی اپنی سہولت کا یہ رشتہ جانے کتنی دیر چلتا ہے۔

ناصر موسیٰ زئی بھی پی ٹی آئی کو پیارے ہو گئے

دوسری جانب پنجاب کے بعد خبیرپختونخوا سے بھی ن لیگ کو دھچکا لگ گیا۔ تحریک انصاف نے ن لیگ کی ایک اور وکٹ گرا دی۔ ن لیگ کے صوبائی جنرل سیکرٹری ناصر موسیٰ زئی نے پارٹی چھوڑ دی۔ تحریک انصاف میں شامل ہو گئے۔ ناصر موسیٰ زئی ساتھیوں سمیت تحریک انصاف میں شامل ہو گئے. بنی گالہ میں عمران خان سے ملاقات کی۔

ناصرموسیٰ زئی نے این اے 4پشاورکے ضمنی الیکشن میں ن لیگ کی ٹکٹ پر حصہ لیا تھا مگر وہ کامیاب نہیں ہوئے تھے۔ ناصر موسیٰ زئی کی پی ٹی آئی میں شمولیت ن لیگ خیبرپختونخوا کے لیے بڑا دھچکا ہے۔

چودھری ظہیر الدین کپتان کی ٹیم میں شامل

ق لیگ سے ناراض چودھری ظہیرالدین نے عمران خان سے بنی گالا میں ملاقات کی۔ چودھری ظہیرالدین نے تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کر لی۔