مقبوضہ کشمیر میں معصوم بچی کے زیادتی و قتل پر ’مودی‘ کا بڑا اعلان


نئی دہلی (24نیوز) مقبوضہ کشمیر میں معصوم بچی سے انتہا پسند ہندوؤں کی درندگی نے دنیا کو ہلا کر رکھ دیا۔ سیاسی و سماجی شخصیات سمیت شوبز شخصیات اور کھلاڑیوں نے بھی شدید رد عمل دیا۔

مقبوضہ کشمیر میں 8 سالہ بچی آصفہ بانو سے درندگی، آہوں اورسسکیو ں کو دنیا نے محسوس کیا اور اس پر شدید غم و غصہ کا اظہار بھی کیا۔ خود بھارت کے اندر سے اس سانحہ کے خلاف آوازیں بلند ہوئیں۔ سلمان خان، عامر خان سمیت بالی ووڈ کے متعدد اداکاروں نے بھی اس کرب کو محسوس کیا۔

یہ بھی پڑھیں: بھارت پھر درندگی پر اتر آیا،گھروں پر گولیاں برسادیں،سات کشمیری شہید 

بھارتی کرکٹ کے سٹار کھلاڑی ویرات کوہلی نے تو یہاں تک کہہ دیا کہ واقعہ کے بعد تو اس ظالم سماج میں رہنے کو بھی دل نہیں کرتا۔ مگر خواب غفلت میں سوئے بھارتی وزیراعظم جاگے اور وہ بھی آٹھ ماہ بعد۔ بالآخر نریندر مودی کو مقبوضہ وادی اور اتر پردیس میں زیادتی کا شکار بچیوں کا خیال آ ہی گیا۔

نئی دہلی میں خطاب کے دوران انہوں نے متاثرہ خاندانوں کو انصاف کی یقین دہانی کرا دی۔ ان کا کہنا تھا کہ مجرم کتنے ہی با اثر کیوں نہ ہوں، قانون سے بچ نہیں پائیں گے۔

پڑھنا نہ بھولیں: امریکہ کاشام پر حملہ، برطانیہ ، فرانس کی حمایت 

ادھر سوشل میڈیا پر ایسے افسوس ناک واقعات ٹاپ ٹرینڈ بن گئے ہیں۔ مقبوضہ وادی سے نئی دہلی تک احتجاج کا سلسلہ زور پکڑ گیا۔ یہاں تک کہ مقبوضہ کشمیر میں شرم کے مارے دو وزرا لال سنگھ اور چندر پرکاش شرما نے استعفیٰ دے دیا۔

صرف یہی نہیں احتجاجی مظاہرے میں بھی شرکت کی۔ ملزموں کی گرفتاری پر بھی زور دیا۔ جس سے بھارتی وزیراعظم مودی کا ضمیر بھی جاگ گیا۔ لیکن کب؟ جب سانحہ کو آٹھ ماہ بیت گئے۔