بھارتی چیف جسٹس نے نااہل شخص کے اختیار کامعاملہ اٹھادیا

بھارتی چیف جسٹس نے نااہل شخص کے اختیار کامعاملہ اٹھادیا


بھارت (24نیوز) نااہل سیاستدانوں کی اہلیت کا رولا پڑگیا،بھارتی چیف جسٹس نے نااہل شخص کے اختیار کامعاملہ اٹھادیا،کہاکہ سزا یافتہ شخص عام انتخابات میں حصہ نہیں لے سکتا تو پارٹی صدارت کیسے کر سکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایک سزا یافتہ شخص جو خود تو الیکشن میں حصہ لینے کا اہل نہیں وہ ایک سیاسی جماعت بنا کر امیدوار کیسے چن سکتا ہے۔جو کام ایک شخص انفرادی حیثیت میں نہیں کر سکتا اسے اجتماعی فیصلے کرنے کا اختیار کیسے دیا جا سکتا ہے؟ کیا اب ایک مجرم فیصلہ کرے گا کہ کسے ووٹ دیا جائے۔ایسا ہونا جمہوریت کی روح کے منافی ہے۔ بھارتی چیف جسٹس دیپک مشرا نے یہ ریمارکس بھارتی جنتا پارٹی کے رہنما ایشونی اپودھاویا کی درخواست پر دیئے جس میں عدالت سے استدعا کی گئی کہ سزا یافتہ سزا یافتہ شخص کے پارٹی سربراہ بننے پر پابندی لگائی جائے۔

بھارتی چیف جسٹس کا مزید کہنا تھا کہ ایک عوامی تنظیم اسکول بنا سکتی ہے۔اسپتال قائم کر سکتی ہے مگر جب بات آتی ہے سیاسی جماعت بنانے کی تو معاملہ کچھ اور ہے۔