سپریم کورٹ کا راول جھیل کو آلودگی سے بچانے کا حکم

سپریم کورٹ کا راول جھیل کو آلودگی سے بچانے کا حکم


اسلام آباد( 24نیوز ) سپریم کورٹ نے بنی گالہ راول لیک میں آلودگی سے متعلق کیس میں راول جھیل کی آلودگی ختم کرنے کے لیے شارٹ ٹرم اقدامات فوری اٹھانے کا حکم دے دیا، جسٹس عمر عطا بندیال نے ریمارکس دیے کہ این جی او کے جاری کردہ منصوبے پر حکومت توجہ دیتی تو آج گیس مہنگی نہ کرنی پڑتی۔

جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے بنی گالہ راول لیک میں آلودگی سے متعلق کیس کی سماعت کی ۔ممبر پلاننگ سی ڈی اے نے عدالت کو بتایا کہ سی ڈی اے نے بنی گالہ اور راول جھیل کے اطراف سے جمع سالڈ ویسٹ ڈمپ کرنے کے لیے پانچ ایکڑ زمین لکھوال میں دے دی ہے،مری سے راول لیک تک چار مختلف مقامات پر پلانٹس لگانے کا منصوبہ بنایا گیا ہے۔

جسٹس عمر عطا بندیال نے ریمارکس دیے کہ این جی او کے جاری کردہ منصوبے پر حکومت توجہ دیتی تو آج گیس مہنگی نہ کرنی پڑتی۔عدالت نے سی ڈی اے کی جانب سے مختص کردہ جگہ کو آج ہی سالڈ ویسٹ کمپنی کے حوالے کرنے کا حکم دے دیا۔

عدالت نے منصوبے کی سی ڈی ڈبلیو پی سے منظوری لیکر دس دن میں عدالت میں رپورٹ پیش کرنے اور پی اے آر سی کے ریسرچ افسر محمد منیر کو بائیو گیس اور متبادل سستی توانائی پر ریسرچ جاری رکھنے کی ہدایت بھی کر دی۔کیس کی مزید سماعت دو ہفتوں کیلئے ملتوی کر دی گئی۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer