اقوام متحدہ میں غزہ پر اسرائیلی جارحیت کے خلاف قرارداد منظور

اقوام متحدہ میں غزہ پر اسرائیلی جارحیت کے خلاف قرارداد منظور


 24نیوز: اقوام متحدہ میں غزہ پر اسرائیلی جارحیت کے خلاف قرارداد منظورکر لی گئی۔ مقدونیہ کے صدر جارج ایمانوف نے ملک کا نام تبدیل کرنے کے معاہدے پر دستخط کرنے سے انکار کردیا۔

  غزہ میں اسرائیلی جارحیت کے خلاف اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں مذمتی قرارداد منظور ہوگئی جبکہ فلسطینیوں کے قتل عام کی ذمے داری حماس پر ڈالنے کا امریکی الزام مسترد کر دیا گیا۔قرار داد کی حمایت میں 120 ملکوں نے ووٹ دیا جن میں سے 8 ممالک نے مخالفت کی اور 45 ممالک غیر حاضر رہے۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے دعویٰ کیا ہے کہ شمالی کوریا سے اب کوئی جوہری خطرہ نہیں۔ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں ٹرمپ نے کہا کہ کم جونگ ان سے ملاقات دلچسپ اور انتہائی مثبت تجربہ رہا۔ شمالی کوریا کے پاس مستقبل کے لیے بہت صلاحیت ہے۔

یہ بھی پڑھیں:سعودی خواتین معاشرتی روایات کیخلاف کام کرنے کیلئے تیار 

جارجیا کے وزیراعظم جیورگی کِویریکاشوِلی نے بڑے پیمانے پر مظاہروں کے بعد عہدے سے مستعفی ہونے کا اعلان کردیا۔ عوام جیورگی کی اقتصادی پالیسیوں کے خلاف تھے۔ جبکہ ان پر قتل کے ایک مقدمہ پر اثرانداز ہونے کا بھی الزام ہے۔مقدونیہ کے نام کا 25 سال پرانا حل ہوتے ہوتے پھر لٹک گیا۔ مقدونیہ کے صدر جارج ایمانوف نے ملک کا نام تبدیل کرنے کے معاہدے پر دستخط کرنے سے انکار کردیا۔ یونان اور مقدونیہ کے وزرا اعظم نے گزشتہ روز نام کی تبدیلی کا معاہدہ کیا تھا۔ جس کے تحت مقدونیہ کا سرکاری نام جمہوریہ شمالی مقدونیہ رکھا جانا تھا۔

پڑھنا نہ بھولیں:شمالی کورین کم جانگ سے ملاقات بے سود،امریکی صدر اپنی ضد پر قائم 

جرمن وزیر خارجہ ہائیکو ماس نے کہا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی ’امریکا فرسٹ‘ کی حکمت عملی کے جواب میں یورپ کو متحد ہونا چاہیے۔ اپنی پہلی پالیسی تقریر کے دوران انہوں نے زور دیا کہ یورپ کو امریکا کے ساتھ متوازن پارٹنر شپ کی خاطر کوشش کرنا چاہیے۔شطرنج کی بھارتی کھلاڑی سومیا سوامی ناتھ سر ڈھانپنے کے معاملے پر ایران میں ہونے والی ایشین نیشنز چیس کپ میں شرکت سے انکار کردیا۔ سومیا سوامی ناتھ کا کہنا ہے اپنے سر کو ڈھاپنے کا ایرانی قانون میرے بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔

یہ خبر ضرور پڑھیں:امریکی صدر اور شمالی کوریا کے سربراہ کی تاریخی ملاقات 

چین کے شہر شینزن میں خواتین کی ڈریگن بوٹ ریس ہوئی جس میں مختلف ممالک کی خواتین نے شرکت کی، شائقین خواتین کی مہارت کی داد دیئے بغیر نہ رہ سکے۔