پاکستان کو فنڈز کی فراہمی،امریکہ نے عالمی ادارےسے بڑامطالبہ کردیا

پاکستان کو فنڈز کی فراہمی،امریکہ نے عالمی ادارےسے بڑامطالبہ کردیا


واشنگٹن( 24نیوز ) امریکہ نےعالمی ادارےسےمطالبہ کیا ہے کہ وہ آئی ایم ایف قرض کےبدلےپاکستان میں حقیقی اصلاحات یقینی بنائے۔

تفصیلات کے مطابق امریکاکے2020بجٹ میں پاکستان کے لئےعسکری امدادی فنڈشامل نہیں، ایلس ویلز جنوبی ایشیا کے لیے امریکہ کی سابق معاون نائب وزیر خارجہ ایلس ویلز نے کہا ہے کہ پاکستان کے ساتھ تعلقات مالی امداد سے ہٹ کر اب تجارتی تعلقات کی طرف بڑھ رہے ہیں اور یوں وہ کثیر جہتی شکل اختیار کر رہے ہیں،تاہم انہوں نے کہا کہ پاکستان پر واضح کر دیا گیا ہے کہ جیش محمد جیسی دہشت گرد تنظیموں کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔

کمیٹی سےخطاب میں امریکی نائب وزیرخارجہ ایلس ویلزنےبتایاشکیل آفریدی کی رہائی کیلئے پاکستان سے بات چیت جاری ہے، ایلس ویلز کا کہناتھا کہ ایشیا پیسفک اور جوہری ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ سےمتعلق کانگریس کی ذیلی کمیٹی کی سماعت کے دوران امریکہ کے مالی سال 2020 کے بجٹ میں جنوبی ایشیا کے لیے مالی ترجیحات کا ذکر کرتے ہوئے ایلس ویلز نے بتایا کہ پاکستان کے لیے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں اقتصادی تعاون کی مد میں سات کروڑ ڈالر مختص کرنے کی تجاویز پیش کی جا رہی ہیں۔

تاہم انہوں نے واضح کیا کہ پاکستان کے لیے امریکہ کا سب سے بڑا مالی تعاون بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کے ذریعے اسے دیا جانے والا 6 ارب ڈالر کا پیکج ہے جو امریکی تعاون کے بغیر ممکن نہیں  ہوتا،ذیلی کمیٹی کے چیئرمین بریڈ شرمین نے اس موقع پر اس تشویش کا اظہار کیا کہ اگر پاکستان آئی ایم ایف کا قرضہ واپس نہ کر سکا تو اس سے امریکہ کے ٹیکس دہندگان کو ایک ارب ڈالر کا نقصان ہو سکتا ہے، علاوہ ازیںکمیٹی ارکان نے بھارت کی طرف سے روس سے ایس 400میزائل دفاعی پروگرام خریدنے کے منصوبے پر تشویش کا اظہار کیا۔