پنجاب اسمبلی کے اراکین کی تنخواہوں میں اضافے پر وزیراعظم برہم


لاہور(24نیوز) ارکان پنجاب اسمبلی کی  تنخواہوں میں اضافے پر وزیراعظم عمران خان نے سخت رد عمل کا اظہار کیا، انہوں کہاکہ ملک خوشحال ہوتا تو فیصلہ درست تھا۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب اسمبلی کے اراکین کی تنخواہوں میں اضافے کے بل کی منظوری کے بعد وزیراعظم کی جانب سے سخت ردعمل سامنے آیا، پنجاب اسمبلی کے ایک ترجمان نے وضاحت کی ہے کہ اراکین اسمبلی تنخواہوں اور مراعات میں اضافے کا بل عجلت میں پاس کرنے کا تاثر درست نہیں، یہ بل 21روز تک زیرغور رہنے کے بعد منظور کیا گیا،کمیٹی نے خیبر پختون خواہ اسمبلی کے وزیراعلی، سپیکر، ڈپٹی سپیکر ، وزراء اور اراکین اسمبلی کی تنخواہوں کا بھی تقابلی جائزہ لیا ۔

لاء کمیٹی کی سفارشات کے ساتھ 13مارچ 2019کو یہ بل اسمبلی میں دوبارہ پیش کیا گیا،جسے بعد ازاں اپوزیشن اور حکومت نے متفقہ طورپررمنظور کیا،  پنجاب اسمبلی نے اب تک مفاد عامہ سے متعلق 13قوانین پاس کیے ہیں اور یہ تعداد باقی اسمبلیوں کے مقابلے میں سب سے زیادہ ہے،یہ تاثر غلط ہے کہ یہ بل عجلت میں پاس کیا گیا ہے۔

دوسری جانب وزیراعظم عمران خان کی جانب سے کیے جانے والے ٹوئٹ میں تنخواہوں میں اضافے پر شدید مایوسی کا اظہار کیا گیا، وزیر اعظم نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہاکہ جب ہم عوام کو بنیادی ضرورتیں دینے کے قابل نہیں تو یہ فیصلہ نا مناسب ہے۔