موبائل گیم "پب جی" پر پابندی لگ گئی، خلاف ورزی کرنے پر 10 طلبا گرفتار

موبائل گیم


(24نیوز) پب جی کے نام سے مشہور "پلیئر ان نون بیٹل گراؤنڈ" گیم پر بھارت کےچند شہروں میں پابندی عائد کردی گئی ہے جبکہ بھارتی میڈیا کے مطابق اس پابندی کی خلاف ورزی کرنے پر 10 طلبا کو گرفتار بھی کر لیا گیا ہے۔

پب جی جنوب کوریا کمپنی نے متعارف کروائی ہے اور اس کا آج کل بہت چرچا ہے ، یہ گیم کھیلنے والے کو اپناعادی بنا لیتی ہے۔ کچھ دن پہلےبھارتی شہر راج کوٹ پولیس کے کمشنر منوج اگروال نے اس گیم پر پابندی عائد کرنے کا اعلان کیا تھا۔  پابندی اس لیے لگائی گئی کہ اس گیم کے سبب کئی سانحات ہوچکے ہیں۔ ان واقعات میںمقبوضہ کشمیر کے علاقے جموں کے ایک ٹرینر نے ہارنے کے بعد اپنے آپ کو نقصان پہنچایا تھا، ایک اور نوجوان نے پب جی کھیلنے کی غرض سے اپنے والد سے موبائل کیلئے ضد کی، موبائل فون نہ ملنے پر نوجوان نے خودکشی کر لی تھی۔ جس پر بھارت میں والدین نے اس گیم پر شدید تحفظات کا اظہار کیا اور حکومت سے درخواست کی کہ اس گیم پر پابندی لگائی جائے۔

پابندی کے بعد اب بھارتی قانون کے ایکٹ انڈر 188 کے تحت  کوئی بھی شخص اس گیم کو کھیلنے والے شخص کی شکایت کرسکتا ہے اور ملوث شخص کو سزا بھی ہوسکتی ہے۔

بھارتی شہر سورت میں بھی پب جی پر پابندی ہے۔ گجرات کی حکومت نے وفاق کو اس گیم پر پابندی کے حوالے سے خط لکھا تھا جس کا نفاذ آج سے ہوا اور خلاف ورزی کرنے والے 10 طلبا کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

واضح رہےاس سے پہلے بلیو وہیل اور مومو نامی گیم بھی شہریوں کی اموت کا سبب بن چکی ہیں۔ پب جی ان گیموں سے الگ گیم ہے لیکن اس کے کافی منفی اثرات سامنے آرہے ہیں۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔