34 لاکھ کا خرچہ، چیف جسٹس نے پی آئی اے کو مارخور کی تصویر سے روکدیا


اسلام آباد (24 نیوز) چیف جسٹس پاکستان ثاقب نثارنے پی آئی اے جہازوں پر جھنڈے کی جگہ مارخور کی تصویر پر نوٹس لے لیا، عارضی طور پر کام سے روک دیا۔ اپنی فلائٹ لیٹ ہونے پر ایم ڈی پی آئی اے سے وضاحت مانگ لی۔

24 نیوز ذرائع کے مطابق چیف جسٹس آف پاکستان نے سپریم کورٹ میں استفار کیا کہ ہمیں پتا چلا ہے کہ آپ ہمارے پرچم کی جگہ کسی جانور کی تصویر لگانا چاہتے ہیں۔ بتائیں جہاز کی دم پر کس جانور کی تصویر آویزاں کررہے ہیں؟

یہ خبر بھی پڑھیں: پوری ن لیگ، شہباز شریف اور میں نواز شریف کے ساتھ کھڑے ہیں: وزیر اعظم

ایم ڈی پی آئی اے نے بتایا کہ پی آئی اے جہاز پر قومی جانور مارخور کی تصویر لگا رہے ہیں۔ جس پر ثاقب نثار نے سوال کیا کہ کیا آپکو پتا ہے کہ ایک جہاز پر کتنی رقم صرف ہوگی، جس پر ایم ڈی نے بتایا کہ ایک جہاز پر تصویر لگانے کیلئے تقریبا 27 لاکھ روپے خرچ آئے گا۔ جس پر چیف جسٹس نے جواب دیا کہ آپکو شاید معلوم نہیں ایک جہاز پر 34 لاکھ خرچ ہونگے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ رپورٹ جمع کروائی جائے، اسٹیکر لگانے کا ٹھیکا کس کو دیا ہے؟ جسٹس ثاقب نثار نے ایم ڈی پی آئی اے سے استفسار کیا کہ آپ کی بھانجی پی آئی اے میں کیا کررہی ہیں؟ جس پر ایم ڈی پی آئی اے نے جواب دیا کہ میرا کوئی رشتہ دار پی آئی اے میں نہیں ہے۔ دوران سماعت عدالت نے پی آئی اے کو جہازوں پر مارخور کی تصاویر لگانے کا کام عارضی طور پر معطل کرنے کا حکم جاری کر دیا۔

 یہ خبر بھی لازمی پڑھیں: ’’کیا ملک کو ایٹمی طاقت بنانے والے غدار ہوتے ہیں؟‘‘

دوسری جانب چیف جسٹس نے سماعت کے دوران گزشتہ روز اپنی فلائٹ لیٹ ہونے پر ایم ڈی پی آئی اے سے وضاحت مانگ لی اور پوچھاکہ کیا کہ آپ کو معلوم ہے میں رات کتنے بجے اسلام آباد پہنچا ہوں؟ جس پر ایم ڈی پی آئی اے نے بتایا کہ آپ سوا ایک بجے پہنچے ہیں۔

 پڑھنا مت بھولئے: ممبئی حملہ متنازع بیان، "قومی سلامتی کونسل کمیٹی" کا اعلامیہ جاری

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ مجھے ڈیڑھ گھنٹے کی تاخیر کی وجہ بتائیں، ایم ڈی پی آئی اے نے کہا کہ کچھ تکنیکی وجوہات کی بناء پر دیر ہوگئی۔ جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ میں آپ کی کارکردگی کا جائزہ بھی لوں گا۔ چیف جسٹس پاکستان نے ایم ڈی پی آئی اے سے استفسار کیا کہ آپکی قابلیت کیا ہے؟ ایک اکانومسٹ کا پی آئی اے میں کیا کام ہے؟