اسلام آباد سے لاپتہ ایس پی طاہر خان داوڑ افغانستان میں قتل


اسلام آباد( 24نیوز )اسلام آباد سے لاپتہ ہونیوالے پشاور کے ایس پی طاہرخان داوڑ کے حوالے سے بری خبر آگئی،مغوی ایس پی کو افغانستان میں قتل کردیا گیا،افغان سکیورٹی حکام نے لاش خاصہ داروں کے حوالے کردی،ان کو ننگرہارمیں قتل کیاگیا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد سے لاپتہ خیبر پی کے پولیس کے ایس پی محمد طاہر داوڑ کو افغانستان میں قتل کردیا گیاہے، ان کی تشدد زدہ لاش افغان صوبے ننگر ہا ر سے بر آمد ہوئی ہے۔

سکیورٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ ایس پی طاہر خان داوڑ کی لاش طورخم بارڈر پر خاصہ دار حکام کے حوالے کی گئی، سکیورٹی ذرائع کے مطابق کے پی کے پولیس کے ایس پی محمد طاہر خان داوڑ 27 اکتوبر کواسلام آباد کے ایف 10سیکٹر میں واک کرتے ہوئے غائب ہوگئے تھے۔ ایس پی پشاور طاہر خان داوڑ کو افغانستان میں دہشت گردوں نے قتل کردیا تھا، ایس پی طاہر خان داوڑکی لاش افغان صوبہ ننگرہار کے علاقہ دوربابا سے ملی۔

پولیس آفیسر کی لاش کے ساتھ دہشت گرد تنظیم کا خط بھی تھا، جس میں ان کے قتل کرنیوالے کی جانب سے پیغام دیا گیا ہے کہ کس بنا پر ایس پی محمد طاہر خان داوڑ کوقتل کیا گیا۔ خط کے متن کے مطابق ایس پی طاہر خان داوڑ کے قتل کی ذمہ داری طالبان خراسانی گروپ نے قبول کی ہے۔

ایس پی طاہر خان داوڑ کون تھے؟

ایس پی رورل پشاورطاہر خان داوڑ 4 دسمبر1968 کو شمالی وزیرستان کے علاقے خدی میں پیدا ہوئے۔ 1982 میں میٹرک کیا 1984 میں بی اے اور 1989 میں پشتو ادب میں ایم اے پاس کیا۔ تعلیم مکمل کرنے کے بعدپبلک سروس کمیشن کے امتحان میں کامیابی کے بعد اے ایس آئی کی حیثیت سے پولیس فورس میں شمولیت اختیار کی۔

1998 میں ایس ایچ او ٹاﺅ ن بنوں، 2002 میں سب انسپکٹر اور 2007 میں انسپکٹر کے عہدے پر ترقی حاصل کی، انہیں قائد اعظم پولیس ایوارڈ سے بھی نوازا گیاتھا۔ 2009 سے 2012 تک ایف آئی اے میں بطوراسسٹنٹ ڈائریکٹر تعینات رہے۔ 2014 میں ڈی ایس پی کرائمز پشاور سرکل اور ڈی ایس پی فقیر آباد رہے۔پشاورحیات آبادپولیس سکول میں بھی خدمات انجام دیئے۔

طاہر داوڑ 2003 میں اقوام متحدہ کے امن مشن پر مراکش اور 2005 میں سوڈان میں بھی تعینات رہے۔ 2005 میں دہشت گردوں کے ساتھ مقابلے میں ان کی بائیں ٹانگ اور بازو میں گولیاں لگی تھیں۔ دو ماہ قبل انہیں ایس پی کے عہدے پر ترقی دے کر رورل پشاور میں تعینات کیا گیا۔ 27 اکتوبر2018 کو مختصر چھٹی پر اسلام آبادچلے گئے اورتھانہ رمناکی حدودسے نامعلوم افراد نے اغواکیا۔