پاکستان کا دفاع ناقابل تسخیر ، کروز میزائل بابر کے نئے ورژن کا کامیاب تجربہ

پاکستان کا دفاع ناقابل تسخیر ، کروز میزائل بابر کے نئے ورژن کا کامیاب تجربہ


اسلام آباد (24نیوز) ملک دفاعی صلاحیت میں اہم پیشرفت۔ پاکستان نے 700 کلومیٹر تک خشکی اور سمندر میں مار کرنے والے بابر کروز میزائل کا تجربہ کر لیا۔ میزائل مختلف قسم کے وار ہیڈ لے جانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان نے ایک بار پھر اپنی سیکنڈ سٹرائیک صلاحیت کی دھاک بٹھا دی۔ کروز میزائل بابر کے نئے ورژن کا کامیاب تجربہ کر کے ثابت کر دیا کہ پاکستان کا دفاع ناقابل تسخیر ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق پاکستان نے کروز میزائل بابر کے نئے ورژن کا کامیاب تجربہ کیا ہے جس کی ہدف کو نشانہ بنانے کی صلاحیت میں اضافہ کیا گیا ہے۔ بابر ویپن سسٹم ون کو پہلے سے بہتر ایرو ڈائنامکس اور ایوی اونکس سے لیس کیا گیا ہے جس کی بدولت وہ 700 کلومیٹر کے فاصلہ تک سمندر اور زمین پر اپنے ہدف کو کامیابی سے نشانہ بنا سکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: مسئلہ کشمیر پر بات چیت کیلئے تیار، امن کوششوں کو کمزوری نہ سمجھا جائے، آرمی چیف

کروز میزائل بابر کم بلندی پر سطح کے ساتھ اڑنے، کئی اقسام کے وارہیڈز لے جانے اور سٹیلتھ صلاحیت سے لیس ہے۔ کروز میزائیل بابر کا تجربہ ڈی جی سٹرٹیجک پلانز ڈوژن، چئیرمین نیسکام، سینئر سائنسدانوں، انجینئرز اور دیگر اعلی حکام نے دیکھا۔

صدر مملکت، وزیراعظم اور چئیرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی جنرل زبیر محمود حیات نے کامیاب تجربہ پر سائنسدانوں اور انجنئیرز کو مبارکباد دی ہے۔