لاپتہ افراد کیس،ماں کی بیٹے کی بازیابی کیلئے دوران سماعت خودسوزی کی کوشش

لاپتہ افراد کیس،ماں کی بیٹے کی بازیابی کیلئے دوران سماعت خودسوزی کی کوشش


کراچی( 24نیوز ) سندھ ہائیکورٹ میں 20 سے زائد لاپتہ افراد کی بازیابی سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران ایک ماں کی بیٹے کی بازیابی کے لیے خود پر پیٹرول چھڑک کرآگ لگانے کی کوشش، موقع پر موجود اہلکاروں نے خاتون سے پیٹرول کی بوتل چھین لی، عدالت نے 2012 سے لاپتہ محمد فیصل کی رپورٹ طلب کرلی۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائیکورٹ میں 20 سے زائد لاپتہ افراد بازیابی سے متعلق درخواستوں پر سماعت ہوئی، دوران سماعت لاپتہ محمد فیصل کی ماں ہاتھ میں پیٹرول کی بوتل لیے چیخ وپکارکرتی بیٹے کی بازیابی کے لیے کمرہ عدالت کے باہرپہنچ گئی اور خود پرپیٹرول چھڑک کر آگ لگانے کی کوشش کی موقع پرموجود سیکورٹی اہکاروں نے خاتوں سے پیٹرول کی بوتل چھین لی۔

 سیاسی رہنماؤں کے پھرسےبلند وبانگ دعوے

لاپتہ محمد فیصل کی والدہ کاکہنا ہے کہ میرا بیٹا 2012 سے لاپتہ ہے جس کاتاحال کوئی سراغ نہیں مل رہا ؟؟ عدالت نے پولیس افسران پر برہمی کااظہار کرتے ہوئے واقعے سے لاعلم اہلکاورں کو فوری بازیابی کا کا حکم دیتے ہوئے سماعت 5 ستمبر تک ملتوی کردی۔