مصر میں قدیم ترین مقبرے کی دریافت ۔۔۔

مصر میں قدیم ترین مقبرے کی دریافت ۔۔۔


( 24 نیوز ) مصر کے علاقے گیزا میں 4400 سال  قدیمی مقبرہ دریافت ہوا ہے، اس مقبرے کی لمبائی دس میٹر ہے ۔ مقبرے کی دریافت کی سب سے خاص اور منفرد بات یہ ہے کہ ہر چیز درست حالت میں موجود ہے ۔ماہرین کے مطابق مقبرے میں قدیم فرعونوں کے مجسمے اپنی اصلی شکل میں موجود ہیں ۔سپریم کونسل آثارِ قدیمہ کے سیکرٹری جنرل مصطفی وازیری نے مقبرے کی سائٹ پر صحافیوں سے گفتگو  کرتے ہوئے اس دریافت کو  گزشتہ دہائیوں میں دریافت کی گئے آثار کی ایک قسم قرار دیا. وازیری نے کہا کہ وہ جنوری میں مزید کھدائی کا آغاز کریں گے، انہیں اس طرح مزید  آثار قدیمہ کے دریافت ہونے کی توقع ہے.

اس مقبرے کی تاریخ قدیم بادشاہوں کے پانچویں خاندان کا تیسرا بادشاہ نیفرکاکائی کے دورِ حکمرانی سے ملتی ہے.پانچویں خاندان نے مصر پر تقریبا 2350 قبل مسیح سے 2500 قبل مسیح  تک حکمرانی کی،  قدیم مصریوں کے بارے میں مشہور ہے کہ اپنے چاہنے والوں  کی لاشیں زندگی بھر کے لئے محفوظ کردیاکرتے تھےجبکہ جانوروں کی ممیاں مذہبی عبادات کے طور پر استعمال کرتےتھے.

یاد رہےمصر نے اس سال ایک درجن سے زائد قدیم دریافتیں کی ہیں،  جس کے بعد مصری لوگوں کا خیال ہے کہ ان دریافتوں کے ذریعے سیاحت کو فروغ ملے گا اور ملکی تشخص بہتر طریقے سے اجاگر ہو سکےگا۔