اسرائیلی وزیر اعظم کی بھارت آمد پرمودی خوش،عوام بپھر گئے،پتلے نذرِ آتش


نئی دہلی (24 نیوز) بھارت اور اسرائیل کے وزرائے اعظم کے درمیان ملاقات ہوئی۔ ملاقا ت میں 9 مفاہمتی یادداشتوں پر دستخط کیے گئے۔ اسرائیلی وزیر اعظم کی آمد پر بھارت کے مختف شہروں میں مظاہرے بھی دیکھنے میں آئے۔

تفصیلات کے مطابق نئی دہلی میں بھارتی وزیر اعظم مودی اور اسرائیل کے وزیر اعظم کے درمیان نئی دہلی میں ملاقات ہوئی۔ ملاقات میں دو طرفہ اور عالمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق اس موقع پر اسرائیل اور بھارت کے درمیان 9 مفاہمتی یاد داشتوں پر دستخط کیے گئے۔

اسرائیلی وزیر اعظم کی بھارت آمد پر نئی دہلی سمیت دیگرشہروں میں فلسطین کے حق میں اور اسرائیل کی مخالفت میں مظاہرے کیے گئے۔ نئی دہلی میں مسلمانوں نے فلسطینیوں پراسرائیلی مظالم کے خلاف احتجاجی مارچ کیا۔ مظاہرین نے اسرائیل مخالف بینرز بھی تھام رکھے تھے۔

اسرائیل مخالف نعرے لگاتے ہوئے شرکاء نے اسرائیلی وزیر اعظم سے اسرائیل واپس لوٹنے کا مطالبہ کیا۔ احتجاج میں شریک افراد نے نتین یاہو کا پتلا بھی جلایا۔ کارگل میں بھی اسرائیل مخالف مظاہرہ کیا گیا۔

واضح رہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو بھارت کے 6 روزہ دورے پر آئے ہوئے ہیں۔ اسرائیلی وزیراعظم کے ساتھ دورے میں 130کاروباری شخصیات پر مشتمل وفد میں عسکری کمپنیوں کے سربراہان بھی شامل ہیں۔ یہ 15برس بعد کسی بھی اسرائیلی وزیر اعظم کا بھارت کا پہلا دورہ ہے۔