2017میں137بچیوں، 515بچوں سے زیادتی، صرف2ملزمان کو سزا، آئی جی پنجاب کی رپورٹ

2017میں137بچیوں، 515بچوں سے زیادتی، صرف2ملزمان کو سزا، آئی جی پنجاب کی رپورٹ


لاہور (24 نیوز) انسپکٹر جنرل پنجاب عارف نواز نے لاہور ہائی کورٹ میں بچوں پر جنسی تشدد اور زیادتی کے واقعات کی رپورٹ پیش کر دی۔ رپورٹ ہونے والے واقعات کے برعکس سزا پانے والوں کی تعداد صفر رہی۔

تفصیلات کے مطابق آئی جی پنجاب کی طرف سے پیش کی گئی رپورٹ میں دل دہلا دینے والے حقائق سامنے آئے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق 2017میں 10سال سے کم عمر 13بچوں کو زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔ زیادتی کا نشانہ بننے والی 4بچیوں کو قتل کر دیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق 2017میں 9بچوں کو بد فعلی کے بعد قتل کیا گیا۔ رپورٹ بتاتی ہے کہ 2017میں پنجاب میں 137بچیوں کو زیادتی کا نشانہ بنایا گیا مگر اس کے ذمہ دار کسی ایک شخص کو بھی سزا نہیں ملی۔

2017میں 515بچوں کو زیادتی کا نشانہ بنایا گیا جن میں صرف 2افراد پر جرم ثابت ہوا۔

پولیس رپورٹ کے مطابق 13بچوں کو زیادتی کے بعد قتل کیا گیا۔ ان جرائم کے مرتکب صرف 2افراد کو قانون کی گرفت میں لایا جا سکا۔

حالیہ رپورٹ کے مطابق 2016میں 530بچوں کے ساتھ زیادتی کے کیس رپورٹ ہوئے۔ اس دوران 9بچوں کو زیادتی کے بعد قتل کیا گیا۔ 2016میں زیادتی کانشانہ بننے والی 115بچیاں تھیں۔