سپریم کورٹ کے حکم پر بھینسوں کو لگنے والے مضر صحت ٹیکوں پر پابندی عائد

سپریم کورٹ کے حکم پر بھینسوں کو لگنے والے مضر صحت ٹیکوں پر پابندی عائد


کراچی (24 نیوز) سپریم کورٹ کے حکم پر بھینسوں کو لگنے والے مضر صحت ٹیکوں پر تو پابندی عائد کر دی گئی، مگر ٹیکے لگے جانور ابھی بھی مویشی منڈیوں میں موجود ہیں۔ فارمرز کہتے ہیں کراچی میں ہزاروں کی تعداد میں بھینسیں ان ٹیکوں کی عادی اور کینسر زدہ ہوچکی ہیں۔

پہلے تو ملاوٹ شدہ دودھ شہریوں کو بیچا جاتا تھا اب تو کراچی میں بیماری والا دودھ بیچنے کا انکشاف سامنے آیا ہے۔ دودھ کی پیداوار بڑھانے والے ہارمون ٹیکوں پر سپریم کورٹ نے پابندی عائد کردی، مگر تا حال ہزاروں کی تعداد میں ٹیکے لگے جانور باڑوں میں موجود ہیں اور دودھ کی فراہمی بھی شہر میں جاری ہے۔ ڈیری فارمرز کہتے ہیں شہر میں موجود بھینسیں کینسر ذدہ ہیں۔

افسوسناک امر یہ ہے کہ متعلقہ اداروں کی جانب سے متاثرہ بھینسوں کی تلفی کا کوئی پلان بھی سامنے نہیں آیا، شہریوں میں اس خبر سے تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔

اس سنگین مسئلہ پر میئر کراچی وسیم اختر کا کہنا تھا کہ عدالتی احکامات آچکے ہیں بروقت کارروائی کریں گے۔ صحت کی ضمانت بننے والا دودھ ہی جب شہریوں کے لئے خطرناک بن جائے تو ایسے میں شہری سوچنے پر مجبور ہیں کہ کیا کھائیں اور کیا پیئیں۔