"وقت آگیا پارلیمنٹ چیئرمین نیب کو طلب کرے"



اسلام آباد(24نیوز) سابق صدر آصف علی زرداری نے کہا کہ وقت آگیا پارلیمنٹ چیئرمین نیب کو طلب کرے، نوازشریف کو ریلیف ملنےپرخوش ہوں،مریم نواز سمیت کسی کی بیٹی کو جیل میں نہیں دیکھنا چاہتے۔

تفصیلات کے مطابق سابق صدر آصف علی زرداری پارلیمنٹ ہاؤس پہنچے توصحافیوں سے خوشگوارگفتگو اورچھیڑچھاڑ شروع ہو ئی ، ایک سوال کے جواب میں سابق صدر کا کہنا تھا کہ ہمارے چیئرمین نے فوجی عدالتوں پرواضح موقف اختیارکرلیا،اب دیکھیں حکومت کیا کرتی ہے؟انہوں نے کہا کہ ہم چیئرمین نیب کے پاس کیوں جائیں؟ پارلیمانی کمیٹی فیصلہ کرے کہ کس کونیب کے پاس جانا ہے، سندھ میں ان ہاؤس تبدیلی کے معاملے پر آصف علی زرداری کا کہنا تھا کہ جی ڈے اے ہویا پی ڈی اےہوکیا فرق پڑتا ہےسندھ میں حکومت ہماری ہی رہے گی۔

صحافی نے سابق صدرآصف زرداری سے پوچھا کہ نوازشریف سے ملاقات ہوگی یانہیں؟ اس پر انہوں نے کہا کہ دیکھیں گےنوازشریف کو ریلیف ملنےپرخوش ہیں،مریم نواز سمیت کسی کی بیٹی کو جیل میں نہیں دیکھنا چاہتے، پھرسوال ہوا کہ نوازشریف نے آپ سے ملنے سےانکارکردیا ہے،سابق صدر نے کہا کہ ہم بھی توماضی میں انکارکرتے رہے ہیں۔

قبل ازیں پارلیمنٹ راہدریوں میں سابق صدر آصف علی زرداری سے صحافی نے سوال کیا، ایسی کون سے وجوہات ہیں کہ ہر دوسال بعد فوجی عدالتوں کی مدت میں توسیع کا معاملہ سامنے آجاتا ہے،   آصف زرداری نے جواب دینے کے بجائے صحافی سے اس کی عمر پوچھی تو صحافی نے کہا کہ میری عمر 25سال ہے۔

زرداری نے مسکراتے ہوئے جواب دیا کہ پاکستان میں سیاست کو ساٹھ ستر سال ہونے کو آئے ہیں تو 25 سال میں اتنے سوال پوچھتا ہے،  ایک دوسرے سینئر صحافی سابق صدر سے ملنے کو آگے بڑھے تو زرداری بولے تم بھی آگئے، ٹھیک تو ہو نا؟

M.SAJID KHAN

CONTENT WRITER