سینیٹ اپوزیشن لیڈر کیلئے ایم کیو ایم پاکستان نے تحریک انصاف کی حمایت کر دی

سینیٹ اپوزیشن لیڈر کیلئے ایم کیو ایم پاکستان نے تحریک انصاف کی حمایت کر دی


کراچی (24 نیوز) نئے سال کے آغاز ہی سے پاکستانی میڈیا میں سینیٹ موضوع بنا ہوا ہے۔ سب سے پہلے سینیٹ میں اپنی مدت پوری کرنے والوں کے حوالے خبریں آتی رہیں بعد ازاں نئے منتخب ہونے والے سینیٹرز۔

سینیٹ الیکشن کے ساتھ متحدہ قومی موومنٹ کی کہانی بھی نتھی ملتی ہے۔ کیوں کہ سینیٹ انتخابات کے ساتھ ساتھ ایم کیو ایم پاکستان میں بہت سی تبدیلیاں دیکھنے میں آئیں، جن میں سب سے بڑی تبدیلی فاروق ستار سے کنوینئر شپ چھینا جانا تھی۔

یہ بھی پڑھئے:صادق سنجرانی چیئرمین، سلیم مانڈوی والا ڈپٹی چیئرمین سینیٹ منتخب

بالآخر سینیٹ انتخابات ہوئے اور متحدہ پاکستان کو بری طرح ناکامی کا سامنا ہوا۔ بعد ازاں سینیٹ چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین کے انتخابات کیے گئے جن میں ایم کیو ایم کی جانب سے کوئی نمائندگی دیکھنے میں نہ آ سکی۔

اب یہ تمام تر سلسلہ ان تنگ و تار گھاٹیوں سے ہوتا ہوا سینیٹ اپوزیشن لیڈر کے انتخاب تک آن پہنچا ہے۔ جس میں ایم کیو ایم نے ن لیگ اور پیپلز پارٹی کو ایک جانب کرتے ہوئے تحریک انصاف کا ساتھ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

ضرور پڑھئے: سینیٹ انتخاب میں جوتماشا ہوا اس کی آئین میں کوئی گنجائش نہیں،نواز شریف 

واضح رہے کہ متحدہ پاکستان نے سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر کے لیے تحریک انصاف کی حمایت کا اعلان کردیا ہے۔تفصیلات کے مطابق بہادر آباد میں دونوں پارٹیوں کے وفود میں ملاقات ہوئی۔ عمران اسماعیل نے کہا کہ نمبرگیم پوری ہے۔ اپوزیشن لیڈر تحریک انصاف کا ہی ہوگا۔

فیصل سبزواری کا کہنا تھا صوبہ میں عوام حکومتی کارکردگی سے مایوس ہیں۔ اپوزیشن لیڈر کے لیے پی ٹی آئی کی حمایت کریں گے۔ انھوں نے کہا کہ شیری رحمان کی قدر کرتے ہیں مگر پیپلز پارٹی کی نمائندہ کی حیثیت سے حمایت نہیں کرسکتے۔

پڑھنا نہ بھولئے: چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کے حصہ میں بھی نا اہلی آ گئی 

ایم کیو ایم پاکستان کی حمایت حاصل کرنے کے لیے عمران اسماعیل کی قیادت میں پی ٹی آئی کا وفد بہادر آباد میں ایم کیو ایم کے عارضی مرکز پہنچا اور ایم کیو ایم رہنماوں سے ملاقات کی۔

فیصل سبزواری اور عمران اسماعیل نے مشترکہ پریس کانفرنس بھی کی۔ اس موقع پر پی ٹی آئی رہنما عمران اسماعیل کا کہنا تھا کہ اعظم سواتی کی حمایت کے لیے آئے تھے۔

ایم کیوایم رہنما فیصل سبزواری نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی نمائندہ شیری رحمان کی قدر کرتے ہیں مگر ان کی حمایت نہیں کرسکتے۔

لازمی پڑھئے:عمران خان نے آصف زرداری کے بارے میں دل کی بات کہہ دی

فیصل سبزواری نے کہا کہ فاروق بھائی جب چاہیں بہادرآباد آ سکتے ہیں یہ ان کا اپنا دفتر ہے۔ ہم اور ہمارے ساتھی فاروق بھائی سے رابطہ میں رہتے ہیں۔