نواز شریف کے حق میں وزیراعظم کی وضاحتوں پر اپوزیشن کا انتہائی اقدام


اسلام آباد(24نیوز) وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے ایک بار پھر نواز شریف سے وفاداری نبھا دی ، کہتے ہیں نوازشریف نے نہیں کہا کہ ممبئی حملہ آوروں کوپاکستان سےبھیجا گیا ، نوازشریف کا بیان بھارتی میڈیا میں غلط رپورٹ ہوا.

قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی  نے کہا کہ نواز شریف کے انٹرویو کو غلط رپورٹ کیا گیا اور بھارتی میڈیا اپنے مقاصد پورے کرنے کے لیے اس معاملے کو اتنا الجھا رہا ہے۔ہم اپنے آپ کو بھارت کا آلہ کار نہ بننے دیں۔جوباتیں یہاں کی جارہی ہیں اس کی کوئی حقیقت نہیں.

یہ بھی پڑھیں: نواز شریف نے قومی سلامتی کمیٹی کا اعلامیہ مسترد کردیا

وزیراعظم پاکستان نے کہا کہ 12 مئی کو شائع ہونے والی خبر ہفتہ کو کسی اخبار میں نہیں تھی، بنا کسی شق کے کہہ سکتا ہوں کہ کسی نے بھی خبر نہیں پڑھی ہوگی، اگر پڑھی ہوتی تو کبھی غداری اور اس قسم کی باتیں نہ کرتے۔ اس موقع پر انھوں نے کہا کہ ابھی اخبار منگوا لیں، اپوزیشن جو باتیں کر رہی ہے اس کی کوئی حقیقت نہیں۔ ایک جملہ جو نان سٹیٹ ایکٹرز کے حوالے سے لکھا گیا ہے وہ غلط شائع کیا گیا۔

وزیراعظم نے کہا کہ نواز شریف اس مسئلہ پر پہلی بار بات نہیں کر رہے بلکہ اس سے پہلے ممبئی حملوں سے متعلق پرویز مشرف، سابق ڈی جی آئی ایس آئی جنرل (ر) پاشا، عمران خان اور رحمان ملک نے بھی ان ایشوز پر بات کی۔

پڑھنا مت بھولیں: نواز شریف کا متنازع بیان، اسٹاک ایکس چینج میں شدید مندی

انھوں نے کہا نوازشریف کو کسی سے حب الوطنی کا سرٹیفکیٹ لینے کی ضرورت نہیں، کسی کے پاس کسی کو غداری کا سرٹیفکیٹ دینے کا اختیار نہیں ہے۔ سیاسی مفاد کے لیے قومی مفاد کو داؤ پر لگایا جا رہا ہے ۔ انھوں نے مزید کہا کہ اپنے آپ کو بھارت کا آلہ کار نہ بننے دیں۔

قومی اسمبلی میں پوزیشن ارکان نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کے بیان کو مسترد کردیا.تحریک انصاف کے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ نواز شریف کے بیان نے کھلبلی مچا دی ہے، نیشنل سیکیورٹی کمیٹی کا اجلاس بلانا پڑا، لیکن نواز شریف نے کمیٹی کا بیانیہ مسترد کر دیا، مریم نواز اور نواز شریف کے بیان سے لگتا ہے یہ سب جان بوجھ کر کیا گیا.

پڑھنا مت بھولیں: نواز شریف پاکستان کو بدنام کررہے ہیں: شاہ محمود قریشی 
جماعت اسلامی کے صاحبزادہ طارق اللہ کا کہنا تھا کہ ذمہ دار شخص کو ایسی بات نہیں کرنی چاہیے، نواز شریف کیخلاف ملکی سالیمت کی خلاف ورزی پر کاروائی کی جائے.ایم کیو ایم کی ثمن سلطانہ جعفری بولیں نوازشریف پانے پانچ سال خاموش رہے عہدے سے ہٹنے کے بعد ایسی باتیں کیوں کیں نواز شریف کا بیان 50 ہزار شہادتوں کی توہین ہے۔
وزیراعظم کے ریمارکس پر اپوزیشن جماعتوں نے اسمبلی میں احتجاج کیا اور حکومت مخالف نعرے لگائے،جس کے بعد اپوزیشن ارکان ایوان سے واک آوٹ کر گئے۔
وزیراعظم کے خطاب کے دوران شیریں مزاری کی بولنے کی کوشش  کی ، اسپیکر نے شیری مزاری کو جھاڑ پلا دی۔

 

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔