نواز شریف کے متنازع بیان پراسلام آباد و لاہور ہائیکورٹس میں درخواستیں، ملک گیر مظاہرے


24 نیوز: سابق اور نا اہل وزیر اعظم میاں نوازشریف کے متنازع بیان پر اسلام آباد اور لاہور ہائی کورٹس میں درخواستیں سماعت کے لیے منظؓور، سندھ اسمبلی میں مذمتی قرار داد منظور، کئی شہروں میں اندراجِ مقدمات کی درخواستیں جمع۔

تفصیلات کے مطابق نوازشریف کے متنازع بیان پر اسلام آباد ہائی کورٹ میں درخواست سماعت کے لئے منظور کر لی گئی ہے۔ جسٹس محسن اختر کیانی منگل کو سماعت کریں گے۔ لاہور ہائیکوٹ میں بھی ایسی ہی ایک درخواست کی سماعت جسٹس شمس محمود مرزا بھی کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں: نواز شریف کے حق میں وزیراعظم کی وضاحتوں پر اپوزیشن کا انتہائی اقدام 

سابق وزیر اعظم نواز شریف کے بیان کے خلاف سندھ اسمبلی میں تمام جماعتوں نے قرارداد متفقہ طور پر منظور کر لی۔ ن لیگ کے علاوہ تمام پارلیمانی جماعتوں کی طرف سے قرارداد پر دستخط کیے گئے ہیں۔ قرارداد میں کہا گیا ہے کہ نوازشریف اپنا بیان واپس لے کر قوم سے معافی مانگیں۔

 پنجاب اسمبلی میں نوازشریف کے بیان کے خلاف قرارداد پیش کی گئی۔ جس پر حکومتی ارکان نے ہنگامہ کھڑا کر دیا۔ اپوزیشن نے بھی نعرے بازی کی۔

راولپنڈی میں بھی غداری کی درخواست جمع کرانے والے شہری کا کہنا ہے کہ نوازشریف کے بیان سے ملکی ساکھ کو نقصان پہنچا۔ رکن قومی اسمبلی جمشید دستی نے بھی نوازشریف کے خلاف مقدمہ کے لیے درخواست دائر کر دی۔

پڑھنا نہ بھولیں: نواز شریف نے قومی سلامتی کمیٹی کا اعلامیہ مسترد کردیا 

پشاور میں بھی پاکستان تحریک انصاف کے رہنما نے تھانہ بھانہ ماڑی میں درخواست جمع کرا دی۔ گوجرانوالہ میں تحریک انصاف کا سابق وزیراعظم کے خلاف پریس کلب کے باہر مظاہرہ، نوازشریف کے خلاف نعرے بازی کی گئی۔

سیالکوٹ، شکرگڑھ میں نوازشریف کے متنازع بیان پر شہر ی برہم ہو گئے۔ مختلف تھانوں میں درخواستیں بھی دے دیں۔ حیدرآباد، خوشاب، اوکاڑہ میں بھی سابق وزیراعظم کے بیان پر شدید ردعمل کا اظہارکرتے ہوئے درخواستیں جمع کرا دی گئیں۔