لاڑکانہ، ایڈز کے مزید 32 کیسز سامنے آگئے

لاڑکانہ، ایڈز کے مزید 32 کیسز سامنے آگئے


(24 نیوز) محکمہ ایڈز کنٹرول پروگرام سندھ کی نااہلی کے باعث صوبےمیں ایڈزاورایچ آئی وی کے مریضوں کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہورہاہے،رتوڈیرومیں 1600افراد کااسکرینگ ٹیسٹ کیاگیا، جس میں ایچ آئی وی پازیٹو اورایڈزکےمزید 32 کیسز سامنے آئے، متاثرہ مریضوں کی تعداد 480 ہوگئی۔

گھوٹکی کےنواحی گاؤں عطرابڑو میں ایک ہی گھرکے3 افراد کے ایچ آئی وی پازیٹونکلے،متاثرہ افراد میں میاں بیوی اورکمسن بیٹی شامل ہے،ایڈزمیں مبتلا خاندان کی ایک بچی جاں بحق ہوچکی ہے، گاوں میں ایڈزسے متاثرہ 5 سےزائد افرادجاں بحق ہوچکےہیں۔

وزیرصحت سندھ عذرا پیچوہو کہتی ہیں کہ رتوڈیرومیں ایڈزپھیلانےوالوں کوسزا دی جائے گی،سندھ بھر میں عطائی ڈاکٹروں کے500کلینک سیل کردیئےہیں، ایچ آئی وی سےبچاؤکیلئےمزید فنڈزکی ضرورت ہے۔

دوسری جانب چنیوٹ میں ایڈز کا مرض سر اٹھانے لگا،درجنوں افراد میں ایچ آئی وی پازیٹو آنے کے باوجود محکمہ صحت کی جانب سے تاحال کوئی اقدامات نہیں کیے گئے۔