شاہ محمود قریشی نے ن لیگ،پیپلزپارٹی سے مدد مانگ لی

شاہ محمود قریشی نے ن لیگ،پیپلزپارٹی سے مدد مانگ لی


ملتان (24نیوز)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے صوبہ جنوبی پنجاب کے معاملے پر ن لیگ اور پیپلزپارٹی سے مدد مانگ لی۔

وزیر خارجہ نے ملتان میں  پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ تحریک انصاف نے اپنے کئے وعدے پر پیشرفت کی۔ تحریک انصاف نے عام انتخابات میں جنوبی پنجاب صوبہ کا وعدہ پورا کیا۔سید سمعیع الحسن گیلانی،نصرﷲ دریشک، پیر ظہور حسین قریشی نے آئینی ترمیمی بل پیش کیا ،جنوبی پنجاب صوبہ آئینی ترمیم بھاری مینڈیٹ سے منظور ہوئی۔

انہوں نے کہا ہے کہ جنوبی پنجاب ملتان ۔ بہاولپور اور ڈی۔جی۔خان کے اضلاع پر مشتمل ہوگا، جنونی پنحاب کی 120 سیٹیں بنیں گی ، جنوبی پنجاب کا اپنی ہائیکورٹ ہو گی اور اپنا چیف جسٹس ہوگا،جنوبی پنجاب صوبہ کے لیے دو تہائی اکثریت چاہیے ، ہمارے پاس دو تہائی اکثریت نہیں ہے، میری پیپلز پارٹی کی قیادت سے ملاقات ہوئی، پیپلز پارٹی سے علیحدہ صوبہ کے لیے بات کی، پیپلز پارٹی نے علیحدہ صوبے بارے مثبت جواب دیا۔

انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ میں ایک طبقہ ہے جو جنوبی پنجاب صوبہ چاہتا ہے، مسلم لیگ ن سے درخواست ہے کہ اپنے فیصلہ پر نظر ثانی کریں،تین اضلاع کے صوبہ کی منتق سمجھ نہیں آئی،وزیر قانون فرخ نسیم اور خسرو بختیار۔ میر بلخ شیر مزاری کا شکریہ ادا کرتا ہوں جنہوں ے آئینی ترمیم کے لیے معاونت کی۔،وزیر اعلیٰ نے کہا کہ اگلے مالی سال میں جنوبی پنجاب سیکرٹریت کے لیے فنڈ متعین کیا جا رہا ہے۔

 جب سب جماعتیں کہتی ہیں کہ جنوبی پنجاب صوبہ الگ ہونا چاہے تو آئیں پھر سب جماعتیں مل کر صوبہ بنا دیتے ہیں،مسلم لیگ ن میں بھی کچھ لوگ ایسے ہیں جو چاہتے ہیں صوبہ بن جائے،مسلم لیگ ن کے لوگوں سے کہوں گا کہ صوبے کو بننے دیں، تین صوبوں کا مطالبہ پورا نہیں ہو سکتا۔جنوبی پنجاب کے میڈیا، وکلاء، تاجروں سمیت دیگر لوگوں گزارش ہے صوبے بنانے میں تعاون کریں۔ نیشل ایکشن پلان پر پوری قوم متفق ہوئی ہے، پاکستان سے دہشت گردی کو ختم نہ کیا تو ملک متاثر ہو گا۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer