وزیراعظم کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس، اہم فیصلے کیے گئے

وزیراعظم کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس، اہم فیصلے کیے گئے


اسلام آباد (24 نیوز): وزیر اعظم کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس، پاکستان میں مخالف ایجنسیوں کی بڑھتی ہوئی سرگرمیوں پر تشویش کا اظہار۔ قومی سلامتی کمیٹی نے باجوڑ میں مسلح افواج اور کوئٹہ میں پولیس افسران پر حملوں کی مذمت کی۔

 

وزیر اعظم کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی اجلاس میں آرمی چیف، چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف نے شرکت کی، اجلاس میں ائیر چیف، نیول چیف، ڈی جی آئی ایس آئی، وزیر داخلہ احسن اقبال، وزیر خارجہ خواجہ آصف بھی شریک ہوئے۔

 

سیکرٹری خارجہ نے علاقائی سکیورٹی کی صورتحال پر اجلاس کو بریفنگ دی، سیکرٹری خارجہ نے مشرق وسطی کی بدلتی صورتحال سے بھی آگاہ کیا۔ شرکاء نے اتفاق کیا کہ مسلمہ امہ کے مفاد میں پاکستان کا کردار نہایت اہم ہے۔ صوبے میں تیز ترین معاشی و اقتصادی ترقی کے لئے وفاقی حکومت بلوچستان حکومت کے ساتھ مل کر موثر انداز میں آگے بڑھے گی۔

 

کمیٹی میں اتفاق کیا گیا کہ صوبے کو زیادہ سے زیادہ مالی وسائل فراہم کئے جائیں گے۔ بلوچستان میں ترقیاتی منصوبوں میں شفافیت کو یقینی بنایا جائے گا۔ بلوچستان میں سرحد پار دہشتگردوں اور جرائم پیشہ افراد کی نقل و حمل روکنے کے لئے بارڈر مینیجمنٹ کو بہتر بنایا گیا ہے۔ صوبے میں انتظامی کارکردگی میں بہتری کے لئے بلوچستان میں بہترین افسران کو تعینات کیا جارہا ہے۔

 

اجلاس میں فنانشل ایکشن ٹاسک فورس فریم ورک کے حوالے سے اٹھائے گئے اقدامات پر بھی اطمینان کا اظہار کیا گیا۔ اجلاس میں تیل اور گیس کی علاقائی پائپ لائنز کے منصوبوں کا بھی جائزہ لیا گیا۔ کمیٹی نےاتفاق کیا کہ یہ منصوبے پاکستان کے بہترین مفاد میں ہیں اور ان سے فائدہ اٹھانا ہوگا۔