وزیر خارجہ نے وزیر اعظم کو شرمندہ کروا دیا


اسلام آباد( 24نیوز ) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی منصب سنبھالنے کے بعد ایک روزہ دورے پر افغانستان کے دارالحکومت کابل پہنچ گئے،وزیر خارجہ کے بھی کفایت شعاری کے دعوے جھوٹے نکلے،انہوں نے بھی اپنے  وزیر اعظم کی خواہشات اور احکامات کی دھجیاں بکھیر دی ہیں۔
ذرائع کے مطابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کابل پہنچ کر اپنے افغان ہم منصب اور صدر اشرف غنی سے ملاقات بھی کی ہے، ترجمان وزارت خارجہ کے مطابق وزیر خارجہ کا کابل کا پہلا دورہ کرنا پاکستان کی افغانستان اور علاقائی امن کی اہمیت کو اجاگر کرتا ہے اور کامیاب دورے سے مستقبل میں امن مذاکرات اور باہمی تعلقات میں مزید پیش رفت ہوگی۔
مذاکرات میں سرحد پار دہشت گردی اور بارڈر مینجمنٹ پر بھی بات چیت کی جائے گی،دورے کے دوران وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی افغان چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ سے بھی ملاقات کریں گے جبکہ وزیر خارجہ کی افغان صدر اشرف غنی سے بھی ملاقات طے ہے
یاد رہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے اپنے خطاب میں اعلان کیا تھا کہ ملک میں کفایت شعاری کو فروغ دیا جائے گا،تمام وزراءسستا سفر کرینگے،دفاتر میں صرف چائے،بسکٹ چلے گی لیکن تمام وزراءبھاری بھرکم قافلوں کے ساتھ دورے کررہے ہیں،عوام کیلئے راستے بند کیے جارہے ہیں،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اپنی بات کو ہی جھٹلا دیا ہے،انہوں نے پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ فرسٹ کلاس استعمال نہیں کرینگے لیکن وہ خصوصی طیارہ لے کر افغانستان پہنچ گئے حالانکہ روزانہ معمول کی پرواز اسلام آباد سے صبع گیارہ بجے کابل جاتی ہے اور تین بجے کابل سے واپس آتی ہے۔
واضح رہے سب سے پہلے ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف پاکستان آئے،اس کے بعد امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے دورہ پاکستان کیا،ان کے دورے کے فوری بعد چینی وزیر خارجہ ای وانگ تشریف لائے،گزشتہ روز ترک وزیر خارجہ چاﺅش اوگلو نے اسلام آباد کا دورہ کیا تھا۔