گدھ انسانوں کیلئے کتنا اہم ہے؟


لاہور( 24نیوز )دور آ سمانوں پر اڑتا اور پرواز کرتا یہ ہے سب سے زیادہ دھتکارا جانے والا پرندہ گدھ ، جسے ہمیشہ موت اور نحوست کی علامت سمجھا جاتا رہا ہے، مگر حقیقت اس کے برعکس ہے، گدھ ایک ماحول دوست پرندہ ہے،جو مردار جانوروں کا گوشت کھا تا ہے اور ان سے پھیلنے والی بیماریوں کو ختم کرتا ہے ۔
ایک وقت تھا آسمان پر اڑنے والے پرندوں میں گدھ نمایاں تھا، یہ پرندہ تیز ترین قوت شامہ سے بلندیوں پر ہی اپنے شکار کو سونگھ لیتا اور پورے گروہ کے ساتھ مردار کے جسم کے اندرونی اعضا کو کھانے پہنچ جاتے تھے اور چند گھنٹوں میں شکار چٹ کر جاتے تھے۔
پاکستان میں سفید پشت والے گدھ سب سے زیادہ پائے جاتے تھے مگر گزشتہ چند دہائیوں سے ان گدھوں کی تعداد میں خطر ناک حد تک کمی واقع ہوئی ہے،آج لاہور کی فضاوں میں آپکو گدھ کے سوا تمام پرندے نظر آئیں گے۔ایک اندازے کے مطابق لاہور سمیت پاکستان بھر میں 99 فیصد گدھیں ختم ہو چکی ہیں ، اور اسکے ناپید ہونے کی بنیادی وجہ جانوروں میں درد دور کرنے والے انجیکشن کا استعمال ہے۔
گدھوں کی تمام نسلوں کو بچانے کے لیے ڈبلیو ڈبلیو ایف کی درخواست پر 2006 میں ڈیکلوفن سوڈیم کی فروخت پر پابندی لگا دی گئی،ڈبلیو ڈبلیو ایف نے گدھوں کی سید پشت والی نایاب گدھ کو بچانے کے لیے چھانگہ مانگہ کے جنگلات میں ولچر ریسٹوریشن سینٹر قائم کر رکھا ہے جہاں ، اب تک ان گدھوں کی تعداد اکیس ہو چکی ہیں ۔
یہاں ان گدھوں کو خاص طریقے پالا جارہا اور انکے لیے زمین سے 10 میٹر بلندتنوں پر گھنوسلے بھی بنائے گئے ہیں جن پر پرسکون انداز میں بیٹھے دکھتے ہیں ، ثبلیو ڈبلیو ایف نے انکی خوراک کے لیے گدھے اور جانور پال رکھے ہیں ۔


خاص لباس میں ملبوس ملازم گدھوں کے لیے خوراک لے جاتا ہے ، اور پھر گدھیں اپنی خواراک کے لیے اسکی جانب لپکتی ہیں،نایاب ہوتی گدھوں کی اس نسل کی بقا میں کامیابی انکی کامیاب بریڈنگ سے ہوئی اس سال بھی گدھوں کے دو چوزے پیدا ہوئے ہیں امید کی جا رہی ہے کہ باہر کا ماحول بہتر ہونے تک ان گدھوں کو پھر سے لاہور کی فضاوں میں چھوڑا جائے اور عدم توازن کے شکار اس ماحول میں پھر سے توازن پیدا کیا جائے۔

اظہر تھراج

صحافی اور کالم نگار ہیں،مختلف اخبارات ،ٹی وی چینلز میں کام کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں