سٹاک مارکیٹ میں نئے قوانین کانفاذ، بروکرز پریشان ،وزیر خزانہ کو خط لکھ دیا

سٹاک مارکیٹ میں نئے قوانین کانفاذ، بروکرز پریشان ،وزیر خزانہ کو خط لکھ دیا


اسلام آباد(24نیوز)وفاقی حکومت کی جانب سےسٹاک مارکیٹ میں کاروبار کے لئے نئے قوانین کے نفاذ کا معاملہ،نئے قوانین پرسٹاک مارکیٹ کے چھوٹے اور درمیانے درجے کے بروکرز میں تشویش کی لہر دوڑ گئی، نئے قوانین پر سٹاک بروکرز نے وزیر خزانہ کو خط لکھ دیا، خط میں کہا گیا ہے کے حکومت چھوٹے سرمایہ کاروں کو ختم کرنا چاہتی ہے، نئے قوانین سے سٹاک مارکیٹ مزید تباہی کی طرف جائے گی ۔

صدر سٹاک بروکرز ایسوسی ایشن حماد نذیر کا کہنا ہے کہ حکومت چھوٹے سرمایہ کاروں کو ختم کرنا چاہتی ہے،سٹاک بروکرز نے خط میں موقف اختیار کیا ہے کہ کاروبار میں آسانی ،روزگار کے مواقع بڑھانے اور کاروبار بڑھانے کی حکومتی پالیسی کے بر خلاف کام ہورہا ہے۔سٹاک مارکیٹ میں 200 سے زائد چھوٹے اور درمیانے جبکہ صرف 20 بڑے بروکرز ہیں، ایس ای سی پی پالیسی بورڈ کی جانب سے پاکستان سٹاک ایکسچینج کے لئے نئے قوانین کی منظوری دے جاچکی ہے۔

 پالیسی کے مطابق 50 کروڑ سے زائد سرمایہ کاری کرنے والے بروکرز کو اپنے بروکریج اکاؤنٹس میں اپنے اور کلائنٹ کے حصص کی اجازت ہوگی،25 سے 50 کروڑ روپے کے سرمایہ کاروں کو ٹریڈنگ سے متعلق محدود حقوق ہوں گے۔25کروڑ والے بروکرز صرف اپنے لئے حصص کی تجارت کریں گے گاہکوں کو کوئی خدمات فراہم نہیں کرسکیں گے،اگلے ہفتے سے قوانین کے لئیے عوامی مہم کا آغاز ہوگا۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer