نواز شریف، شہباز شریف میں اختلافات شدت اختیار کرگئے

نواز شریف، شہباز شریف میں اختلافات شدت اختیار کرگئے


24نیوز : سابق وزیراعظم نواز شریف اور صدر مسلم لیگ ن شہباز شریف میں اختلافات شدت اختیار کرگئے، نوازشریف جارحانہ سیاست جبکہ شہبازشریف مفاہمت مندانہ سیاست چاہتے ہیں۔

ذرائع کے مطابق پیپلزپارٹی کی طرف سے شہبازشریف کو ووٹ نہ دینے کے فیصلے میں کسی حد تک نواز شریف کی مرضی بھی شامل ہے، نوازشریف قومی اسمبلی میں خواجہ آصف کو اپوزیشن لیڈر نامزد کرنا چاہتے ہیں۔  شہباز شریف نے پنجاب میں خواجہ سعد رفیق کو اپوزیشن لیڈر بنانے کی ہدایت بھی تسلیم نہیں کی۔ ذرائع کے مطابق نواز شریف کو شکوہ ہے کہ شہباز شریف پارٹی متحد رکھنے میں نا کام ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:آرمی چیف نے 15 دہشت گردوں کی سزائے موت کا پروانہ جاری کردیا 

 دونوں بھائیوں کے درمیان تلخی اتنی بڑھ چکی ہے کہ شہباز شریف ملاقات سے بھی کترا رہے ہیں، شہباز شریف آج نواز شریف سے ملاقات کے لئے بھی نہیں گئے۔ نوازشریف کو تین ہفتوں سے یقین دلایا جا رہا ہے کہ آنے والے کل میں ضمانت ہو جائے گی۔ شہباز شریف گزشتہ روز احتساب عدالت سے بھی بھائی کو ملے بغیر جانے لگے تھے.

پڑھنا نہ بھولیں:شہباز شریف کو ووٹ نہیں دیں گے پیپلز پارٹی کا دو ٹوک اعلان 

احتساب عدالت میں موجود صحافیوں کے استفسار کے بعد شہبازشریف نے نواز شریف سے ملاقات کی تھی۔ گزشتہ ہفتے جیل میں ہونے والی ملاقات میں بھی تلخی کا عنصر غالب رہا تھا۔

شازیہ بشیر

   Shazia Bashir   Edito