"پاکستان کے ساتھ روز روز مذاق کرنا چھوڑ دیں"



حیدرآباد ( 24 نیوز )  آصف علی زرداری کی للکار، انھوں نے کہا کہ تین سال کیلئےآنےوالےفیصلےنہیں کرسکتے، مرغی انڈوں والوں کوکیوں لےکرآئے ہو؟ پاکستان کےساتھ روز،روزمذاق کرناچھوڑدیں.

 حیدر آباد میں جلسے سے خطاب کے دوران سابق صدر آصف علی زرداری خوب برسے، ان کا کہنا تھا کہ جس کی نوکری کی مدت 3 سال کی ہو اس کو میری قوم کے فیصلے کرنے کا حق کیسے پہنچتا ہے؟ یہ حق صرف پارلیمنٹ کے پاس ہے، 9 لاکھ کیس زیر سماعت ہیں، ہر ایک اپنی آئینی حدود میں رہ کر کام کرے تو بہتر ہوگا۔

آصف علی زرداری نےگزشتہ الیکشن اور اس کےنتائج میں بننےوالی حکومت کےحوالےسے کہاکہ جب نوازشریف کو لایا جارہا تھا تو ان کو کہا تھا خدا کا خوف کریں، ایسا مت کریں، پہلے ان کو لے آئے پھر لڑ پڑے، پھران سے چلائی نہیں گئی اب ہائے حسین ہے۔ ملک 3 سال آگے جاتا ہے، آپ ایک لکڑی اٹھاتے ہیں اور پھر 15 سال پیچھے چلے جاتے ہیں، پاکستان کے ساتھ یہ روز روز کا مذاق بند کریں، کافی مذاق ہو چکا ہے۔

ضرور پڑھیں:انکشاف15 جون 2016

ان کا مزید کہنا تھا کہ سو دن میں کافی کچھ ہو سکتا ہے، ان کو سو دن سے زیادہ ہو گئے ہیں، یہ کہتے ہیں سو دن بہت کم ہیں۔ ہم نے سو دن میں سوات کے اندر آپریشن کیا، پرویز مشرف کی چھٹی  کرائی اور پختونوں کو شناخت دی۔ آپ کو یاد ہوگا سوات پر صوفی محمد کا قبضہ تھا، جس کیلئے بے نظیر بھٹو نے کہا تھا کہ یہ ان سے نہیں جائیں گے ان کو ہم نکالیں گے۔پہلے سو دن میں بے نظیر انکم سپورٹ کارڈ بھی بنایا۔ ان حکمرانوں کو مرغی اور انڈے کے علاوہ کوئی کام کرنا نہیں آتا ۔

سابق صدر آصف علی زرداری نے عمران خان کی حکومت کوکڑی تنقید کانشانہ بناتے ہوئے کہا  کہ تجاوزات کےخلاف آپریشن کےنام پر5لاکھ لوگوں کاروزگارختم کردیاگیا ہے۔ عوام کے مسائل کٹھ پتلیاں نہیں سمجھ سکتیں، بےنظیرانکم اسپورٹ پروگرام بندنہیں کرنے دیں گے۔

دنیا میں بہت اس طرح کے لوگ آئے ہیں جو کہ لائے گئے ہیں اور وہ یہ سمجھتے ہیں کہ وہ ہر کام اچھا کر لیں گے، اگر میں اچھی حکومت چلا سکتا ہوں اس کا مطلب یہ نہیں کہ میں کرکٹ بھی اچھی کھیل سکتا ہوں۔ اگر ان کو عقل سمجھ نہیں ہے تو ان کو کیوں لائے ہیں اس سے تو بہتر تھا کہ آپ  الیکشن ہونے دیتے ساری پارٹیاں لڑ جھگڑ کر حکومت قائم کر سکتیں۔ عوام کےمسائل صرف پیپلزپارٹی ہی حل کرسکتی ہے۔