"جیل ہمارا دوسرا گھر ہے"



ٹنڈوالہٰ یار(24نیوز) سابق صدر آصف زرداری کا کہنا ہے پیپلز پارٹی کے خلاف جب بھی کارروائی ہوتی ہے وہ اور مضبوط ہوتی ہے، جیل تو ہمارا دوسرا گھر ہے ،ہماری گرفتاری سے کیا ہوگا؟ ان کو غلط فہمی ہے کہ ہمیں کوئی خوف ہے۔

تفصیلات کے مطابق ٹنڈوالہٰ یار میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہو ئے سابق صدر آصف علی زرداری کا کہنا تھا کہ ہماری پارٹی کے خلاف جب بھی کوئی کارروائی کی گئی وہ اور مضبوط ہوئی، جیل جانے سے نہیں گھبرائے وہ تو ہمارا دوسرا گھر ہے  ہماری گرفتاری سے کسی کو کچھ نہیں ملے گا، ان کا کہنا تھا کہ یہ احمقوں کی حکومت ہے انہیں سمجھ ہی نہیں، پکڑ دھکڑ چھوڑیں گے تو کچھ کریں گے،  کراچی کی ایمپریس مارکیٹ 50 سال قائم کی ، دکانداروں کو پہلے متبادل جگہ دی جانا چاہیے تھی۔

آصف زرداری کا کہنا تھا کہ70سال سے یہ سوچ نہیں آئی کہ بلوچستان میں بھی پورٹ بن سکتے ہیں، حکومت کہتی ہے کہ100 دن میں کیا ہوسکتا ہے ، ہم نے 100دن میں  مشرف کو نکال دیا، اگر کام کرنا آتا ہوتو یہ دن بہت ہیں اگر یہ کم ہیں تو وہ 100سال میں بھی کچھ نہیں کرسکتا،الیکشن شروع ہوا تو ایف آئی اے نے تحقیقات شروع کردیں، ہم ان سب کو جلد گھر بھیج کر قبل از وقت انتخابات کروائیں گے، 

ضرور پڑھیں:انکشاف15 جون 2016

سابق صدر کا کہنا تھا کہ سیاست سوچ سمجھ کر کی جاتی ہے جو کہ ان کے بس کی بات نہیں، ان کو کھیلنا آتا ہی نہیں یہ انڈر 16 کھلاڑی ہیں، سیاست میں ہر قدم اس طرح لیاجاتاہے کہ سو سال بعد کیا اثر ہوگا،پیپلز پارٹی نے بھٹو صاحب کی شہادت کو قبول کیا ان سے جنگ نہیں کی، ہماری پارٹی نہیں چاہتی ادارے کمزور ہوں ،ورنہ ایک اور جارحانہ فورس ہے،ہم ان کی حوصلہ افزائی نہیں چاہتے اس لیے ہم ہمیشہ انہیں گنجائش دیتے ہیں، ہمیں ان سے صرف غیر جانبداری لینی ہے باقی پاور ہم خود لیں گے۔

آصف زرداری کا کہنا تھا کہ جھگڑا 18 ویں ترمیم کا تھا، 18ویں ترمیم میں صوبوں کو کچھ زیادہ حصہ ملاصوبے ساتھ ہوں گے تو پاکستان مضبوط ہو گا،جرمنی میں چار صوبے پورا جرمنی چلاتے ہیں،جبکہ کراچی سے 63 فیصد روینیو حاصل ہوتاہے، ہم 63فیصد واپس نہیں مانگ رہے وہی مانگ رہے ہیں جو حصہ بناہے، ابھی بھی سندھ  اور بلوچستان کو پورا حصہ نہیں بنایاگیا،تینوں وزرائے اعلیٰ انکے بنائے ہوئے ہیں ،وہ بولتے نہیں لیکن تکلیف سب کو ہے ۔

ان کاکہنا تھا کہ یہ ایف بی آر سے کلیکشن نہیں کر پا رہے کیونکہ ڈنڈے سے وصولی نہیں ہوسکتی،یہاں نہ اسٹاک ایکسچینج چل رہاہے نہ دکانیں چل رہی ہیں۔ 

سانحہ اے پی ایس پر بات کرتے ہو ئے سابق صدر کا کہنا تھا کہ ملزمان کو موجودہ حکومت سزا دے، نیوز پریس کانفرنس میں گفتگو کرتے ہو ئے کہا کہ کپتان نے ہر چیز کو مہنگا کیا ، اور کہتا ہے کہ ڈالر کا پتہ نہیں کہاں جاتا ہے، مسئلہ صرف 18ویں ترمیم کا ہے اگر میں مان بھی جاؤ تو پارٹی نہیں مانے گی، روپے کی قدر میں کمی کا احساس حکمرانوں کو نہیں ہوتا، ہمارے ہاں سیاسی تربیت نہیں ہونے دیتے۔

قبل ازیں پیپلزپارٹی کےشریک چئیرمین آصف علی زرداری آج رضوی ہاؤس ٹنڈو الہ یار میں ظہرانے میں شرکت سے پہلے تیاریاں مکمل کی گئیں،جیالوں کا جوش و خروش دیدنی تھا اور شہر میں خوب چہل پہل رہی، جلسہ گاہ میں پیپلز پارٹی کے جھنڈوں کی بہار ، خواتین اور مرد کارکنان جوق در جوق جلسہ گاہ کی طرف رخ کیا۔

M.SAJID KHAN

CONTENT WRITER