قومی اسمبلی کے اجلاس میں قومی ایئرلائن کے چرچے

قومی اسمبلی کے اجلاس میں قومی ایئرلائن کے چرچے


اسلام آباد(24نیوز) قومی اسمبلی کے اجلاس میں قومی ایئرلائن کی گونج، سامان چوری سے شروع ہونے والی بات جہاز چوری پر جا پہنچی۔ اسپیکر ایاز صادق بولے دس کروڑسے زائد کا جہاز اونے پونے داموں بیچا گیا ۔

 تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کے اجلاس میں وقفہ سوالات کے دوران جماعت اسلامی کے رکن شیر اکبر خان بولے کہ پی آئی اے کا تو بیڑا غرق ہو گیا۔ مسافروں کے سامان کی حفاظت بھی نہیں کی جاتی ۔

اسپیکر ایاز صادق بھی خاموش نہ رہ سکے اور بولے شیر اکبر صاحب آپ سامان کی بات کرتے ہیں یہاں تو پورا جہاز بھی چوری ہوگیا۔ پی آئی اے کا جہازدس کروڑ سے زائد کا بکنا تھا جسے ایک کروڑسے بھی کم میں بیچا گیا۔ دو افسران بھِی ملوث تھے۔

اسپیکر کی بات ختم ہوئی تو پارلیمانی سیکریٹری راجہ جاوید اخلاص بھی کھڑے ہوگئے ۔ نایاب مشورہ دیا کہ مسافر اپنے سامان پر خود نظر رکھیں۔ پارلیمانی سیکرٹری ماحولیات رومینہ خورشید کے موجود نہ ہونے پر اسپیکر نے آج کے لئے ان کے ایوان میں داخلے پر پابندی لگا دی۔