مودی موت کا سوداگر ہے،بھارتی پروفیسرنے پردہ چاک کردیا

مودی موت کا سوداگر ہے،بھارتی پروفیسرنے پردہ چاک کردیا


دہلی (24نیوز)بھارتی پروفیسر نے اپنے وزیر اعظم نریندر مودی کے پاکستان مخالف منفی پراپیگنڈے کا پردہ چاک کردیا،پروفیسر اشوک کہتے ہیں کہ مودی موت کے سوداگر ہیں،ان کو سیاست کے لیے لاشوں کی ضرورت ہوتی ہے۔

 سوئیڈن میں پروگرام آف انٹرنیشنل اسٹڈیز کے بھارتی نژاد ڈائریکٹر ایسوسی ایٹ پروفیسر اشوک سوائین نے بھارتی وزیراعظم پر تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ مودی صرف لاشوں پر سیاست کرنا جانتے ہیں۔ مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں بھارتی پروفیسر نے کہا کہ مودینےانتخابات جیتنے کے لیے 2002ء میں گودھرا ٹرین آتشزدگی کے واقعے کی 59 لاشوں کو استعمال کیا اور اب پلوامہ میں ہلاک فوجیوں کی لاشوں کے ساتھ بھی وہی کر رہے ہیں۔

اشوک سوائن نے کہا کہ اڑی واقعے پر مودی نے دریائے سندھ کے پانی کو روکنے کی دھمکی دی تھی، پلوامہ واقعہ پر پاکستان کو ذمہ دار کیوں قرار دیا جا رہا ہے؟ عادل احمد ڈار کیوں پلوامہ میں ہونے والے حملے کا ذمہ دار بنا؟ اس لیے کہ اس کو اسکول سے واپسی پر بھارتی فورسزنے زمین پر ناک رگڑوائی تھییاد رہے کہ دو روز قبل بھارتی سنٹرل ریزرو پولیس فورس کے 2547 اہلکاروں پر مشتمل قافلہ 78 بسوں میں جموں سے سرینگر جارہا تھا، سری نگر جموں شاہراہ پر پلوامہ کے علاقے اونتی پورہ میں حملہ آور نے بارود سے بھری گاڑی ایک بس سے ٹکرا دی، قریبی گاڑیاں بھی دھماکہ کی زد میں آگئیں۔ 

حملے میں 44 اہلکار ہلاک، 20 زخمی ہوئے تھے۔ حملے کے بعد بھارت نے بغیر سوچے سمجھے اس حملے کا الزام پاکستان پر عائد کرنا شروع کر دیا اور تاثر دینے کی کوشش کی کہ یہ حملہ پاکستان نے کروایا ہے۔ لیکن کئی بھارتی شہری اپنی حکومت کی گھناؤنی سازش کو بخوبی جانتے ہیں اور انہوں نے پلوامہ حملے کا الزام پاکستانپر عائد کرنے سے انکار کر دیا ہے۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer