ظفر حسن کاقتل، پوسٹمارٹم کے بعد ابتدائی ایم ایل رپورٹ منظرعام پر آگئی

ظفر حسن کاقتل، پوسٹمارٹم کے بعد ابتدائی ایم ایل رپورٹ منظرعام پر آگئی


کراچی(24نیوز) ایم کیو ایم لندن کے رہنما پروفیسرظفرحسن کی ابتدائی ایم ایل رپورٹ منظر عام پر آگئی، رپورٹ کے مطابق جسم پر کسی تشدد کا نشان نہیں پایا گیا، رپورٹ میں دل کا سائز معمولی طور پر بڑا ہونے کی نشاندہی ہوئی۔

تفصیلات کے مطابق 2 روز قبل کراچی کے علاقہ ابراہیم حیدری سے ایم کیو ایم لندن رہنما پروفیسر ظفر حسن کی ملنے والی لاش کی ابتدائی ایم ایلرپورٹ 24 نیوز نے حاصل کرلی۔ رپورٹ کے مطابق پروفیسر ظفر حسن کے جسم پر کسی قسم کے تشدد کے نشانات واضح ہیں نہ کوئی زخم کا نشان پایا گیا ہے۔ گزشتہ روز پروفیسر ظفر حسن عارف کی باڈی اسکیننگ کروائی گئی جس کے نتائج میں کسی تیز دھار اعلے کے وار بھی نظر نہیں آرہے جبکہ ریڈیالوجی کی تمام رپورٹس بھی مثبت آئی ہیں۔ رپورٹ میں دل کا سائز معمولی طور پر بڑا ہونے کی نشاندہی کی گئی ہے۔

 مزید واضح رپورٹس کے لیے کیمیکل اگزیمینیشن کروانے کا فیصلہ بھی کیا گیا تھا جس کا رزلٹ اب تک سامنے نہیں آیا ہے۔ پوسٹ مارٹم اور کیمیکل اگزیمینیشن رپورٹ آنے کے بعد ہی موت کی حتمی وجہ سامنے آسکے گی جس میں ایک ہفتے کا وقت لگ سکتا ہے۔