سپریم کورٹ نے صدیق الفاروق پر 20 ہزار جرمانہ عائد کر دیا

سپریم کورٹ نے صدیق الفاروق پر 20 ہزار جرمانہ عائد کر دیا


اسلام آباد(24نیوز) دیال سنگھ کالج عمارت کیس میں تاخیر سے جواب جمع کرانے پر سپریم کورٹ نے چیئرمین متروکہ وقف املاک صدیق الفاروق پر 20 ہزار جرمانہ عائد کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں دیال سنگھ کالج عمارت کیس کی سماعت ہوئی۔جواب تاخیر سے جمع کرانے پر عدالت نے چیئرمین متروکہ وقف املاک پر 20ہزار جرمانہ عائد کر دیا۔چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیے کہ جرمانہ چیئرمین صدیق الفاروق اپنے جیب سے ادا کریں۔عدالتی حکم کےباوجود جواب وقت پر نہیں دیا گیا۔آئندہ سماعت پرتمام ریکارڈ لے کر آئیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ سابق چیئرمین آصف ہاشمی کو بھی نوٹس کررہا ہوں ںوزارت داخلہ سے کسی کو بلائیں۔متروکہ وقف املاک فروخت کرکے آصف ہاشمی کہاں چلا گیا۔ہمیں بتائیں صدیق الفاروق کی تعلیمی قابلیت کیا ہے ۔

صدیق الفاروق کے وکیل نےموقف اختیار کیا کہ صدیق الفاروق نے گریجوئیشن کی ہے۔چیف جسٹس نے کہا کہ گریجوئیشن کے ساتھ ان کی سیاسی وابستگی بھی اہم ہے۔متروکہ وقف املاک جائیداد پر کل پرسوں اہم فیصلے دے رہے ہیں۔ صدیق الفاروق کے وکیل نے کہا کہ عدالت صدیق الفاروق کی سیاسی وابستگی کے ساتھ انکی کارکر دگی بھی دیکھے۔عدالت نے کیس کی سماعت ایک ہفتے کے لئے ملتوی کر دی۔