جیسا دیس ویسا بھیس، سعودی لڑکی کینیڈین رنگ میں رنگ گئی

جیسا دیس ویسا بھیس، سعودی لڑکی کینیڈین رنگ میں رنگ گئی


اوٹاوا( 24نیوز )18سالہ رہف القنون وہ لڑکی ہے جس نے اپنا گھر بار،اپنا ملک چھوڑ کر کینیڈا میں پناہ لے لی ہے، کینیڈین حکومت نے بھی اسے شہریت دے دی ہے، رہف القنون نے سعودی عرب جانے سے انکار کر دیا تھا، کینیڈین وزیر خارجہ نے خاتون کو نئی بہادر کینیڈین قرار دے دیا گیا ہے۔

رہف محمد القنون براستہ بنکاک آسٹریلیا جانا چاہتی تھی لیکن انھیں پہلے کویت واپس جانے کے لیے کہا گیا جہاں ان کا خاندان ان کا انتظار کر رہا تھا، انھوں نے واپس جانے سے انکار کر دیا اور ایئرپورٹ کے ہوٹل کے ایک کمرے میں خود کو بند کر لیا، جس سے انھیں بین الاقوامی توجہ بھی حاصل ہوئی۔

سعودی خاتون رہف القنون کا کہنا تھا کہ وہ مذہب اسلام چھوڑ چکی ہے اور ڈر ہے کہ اگر مجھے سعودی عرب واپس بھیج دیا گیا تو ان کے خاندان کے افرا دقتل کردیں گے کیونکہ سعودی عرب میں ارتدادِ اسلام کی سزا موت ہے۔

برطانوی ویب سائٹ کے مطابق رہف القنون کی ایسی تصاویر سامنے آئی ہیں جس میں صاف نظر آتا ہے کہ وہ کینیڈین رنگ ڈھنگ اختیارکرچکی ہے،اس نے اپنے سوشل میڈیا پر اپنی سر گرمیاں شیئر کی ہیں۔

اس نے سعودی عرب کا خصوصی لباس پہننا چھوڑ دیا ہے اور کھانا بھی تبدیل کرچکی ہے اس نے کینیڈین کھانے کھانے شروع کردئیے ہیں،اب اسے چوبیس گھنٹے سکیورٹی فراہم کی جارہی ہے کیونکہ اس کی زندگی بھی خطرہ ہے۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer