قومی اسمبلی:اپوزیشن کا حکومت سے بڑا مطالبہ



 اسلام آباد(24نیوز)قومی اسمبلی کا اجلاس سپیکر اسد قیصر کی صدارت میں پارلیمنٹ ہائوس میں جاری ہے،اپوزیشن اور حکومت کی جانب سے مختلف ارکان نے تقاریرکیں۔

مسلم لیگ ن کے پارلیمانی لیڈر خواجہ محمد  آصف نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ  میرے والد نے ایک تقریر میں کہا تھا جب تک میڈیا آزاد ہے جمہوریت کو کوئی نقصان نہیں پہنچا سکتا ۔میڈیا ہمارا بھی احتساب کرتا ہے آپ کا بھی احتساب کرتا ہے اگر صحافت محفوظ نہ ہوئی تو جمہوریت غیر محفوظ ہو گی-

خواجہ آصف نے کہا کہ  آئی ایم ایف کے نمائندے یہاں لاکر بٹھا دیئے گئے ،نان الیکٹڈ لوگوں سے الیکٹڈ لوگوں کی توہین کرائی جارہی ہے، ایک روز وزیر مملکت کو وفاقی وزیر بنایا دوسرے دن نان الیکٹڈ کے دبائو پر واپس کردیا گیا-

رانا ثنا اللہ کیخلاف ثبوت ہیں،کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا:شہریار آفریدی

قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے شہریار آفریدی نے کہا کہ پاکستان کی اینٹی نارکوٹس فورس ایک پیشہ ورانہ فورس ہے جو انتقامی کارروائیوں پر یقین نہیں رکھتی، دنیا بھر میں پاکستان میں اے این ایف کی سزا کی شرح 98 فیصد ہے، یہ لوگ کسی کوپھنسانے کا کام نہیں کرتے،رانا ثناءاللہ کی گاڑی کی تین ہفتے تک مانیٹرنگ کی گئی، جب انہیں روکا گیا تو ان سے پوچھا یہ آپ کا سامان ہے جس پر رانا ثناء نے اپنے سامان کی تصدیق کی، ان کا سامان بھی ان سے پوچھ کر کھولا گیا۔

رانا ثناءاللہ کے خلاف تمام ثبوت موجود ہیں، عدالت میں چیزیں جائیں گی، کہا جارہا ہے جوڈیشل ریمانڈ کیوں لیا، جسمانی ریمانڈ جب لیتے ہیں جب رنگے ہاتھوں نہ پکڑا ہو، ان کو رنگے ہاتھوں پکڑا گیا، ہم انتقامی کارروائیوں پر یقین نہیں رکھتے، ہم مقدس گائے کا تاثر ختم کررہے ہیں، ہمیں کسی نے نہیں بتایا کہ اس کو نشانہ بنائیں، جان جاتی ہے تو جائے لیکن کمپرومائز نہیں کروں گا۔

احتساب ہوگا سب کا ہوگا: علی محمد خان

وزیر مملکت علی محمد خان   نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ  اپوزیشن ہم پر تو الزامات ایسے لگارہی ہے جیسے پینتیس سال یہ نہیں ہم اقتدار میں رہے ہوں۔ ایک سابق وزیر اعظم نے سات کروڑ روپے عمرے پر اڑا دیئے لندن سے سٹوری آئی کہ زلزلے کے پیسے بھی ڈکار لئے گئے یہ کسی پاکستانی صحافی نے خبر نہیں دی ،جائیں لندن جاکر کیس کریں۔ جب فاروق اعظمؓ سے سوال ہوسکتا ہے تو زرداری، نوازشریف، عمران اور علی محمد خان سے کیوں نہیں ہوسکتا۔ خواجہ آصف کہتے ہیں ’’رہے گا نام نوازشریف کا ‘‘یار رکھو رہے گا نام اللہ کا اور پھر پاکستان کا ۔میں کابل میں سفارتخانے میں رہ سکتا ہوں وزیر اعظم واشنگٹن میں سفارتخانے میں رہ سکتے ہیں تو یہ کیوں نہیں رہ سکتے تھے۔

ویڈیو دیکھیں:

ضرور پڑھیں:ڈالر سستا ہوگیا

انہوں نے کہا کہ کیا ان مائوں کو چوکوں میں بھیج مانگنے پر عمران خان نے کھڑا کردیا، کیا ان مائوں کو بھیک مانگنے پر ان پینتیس سال اقتدار میں رہنے والوں نے کھڑا نہیں کیا۔ علی محمد خان نے چوکوں پر بھیک مانگتی مائوں کے لئے نظم بھی کہی ،  احتساب ہوگا سب کا ہوگا سب کا ہونا چاہئے پروڈکشن آرڈرز جاری ہونا چاہئے مگر پروڈکشن آرڈرز کے ساتھ ساتھ عوام کا بھی کوئی حق ہے۔ 

حکومت سیاستدانوں کیخلاف صف آرا ہولیکن تاجروں سے تو بات کرے: پرویز اشرف

سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف نے کہا کہ حکومت نے ملک کا ماحول کشیدہ کر دیا ہے۔ تنائو کی صورتحال پیدا کر دی ہے۔  حکومت سیاستدانوں کے خلاف صف آرا ہو۔ بزنس مین کے ساتھ تو مشاورت کرے۔معیشت پر برا وقت حکومت کے غیر ذمہ دارانہ رویہ سے آیا ہے۔ پروڈکشن آرڈر ارکان کا حق ہے۔ ہو سکتا ہے کہ کل سارے پروڈکشن آرڈرز حکومتی بنچز کے لیے ہوں۔

ویڈیو دیکھیں:

انہوں نے کہا کہ ممبران کو بلانے سے کیا ان کی سزا کم یا کیسز کمزور ہو جائیں گے۔ پروڈکشن آرڈرز جاری نہ کرنے سے بری روایت پڑے گی۔ پروڈکشن آرڈر کے لیے کسی کو دبائو نہیں ڈالنا چاہیے۔ آپ کو انصاف سے فیصلہ کرنا چاہیے۔ راجہ پرویز اشرف امید ہے کہ ارکان کے آئندہ سیشن کے لیے پروڈکشن آرڈر جاری کر دیے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں اجلاس اس لیے ریکوزیشن کرنا پڑے کہ عوام ایشوز کافی ہو گئے تھے۔ یہاں بحث کرنے کے لیے اجلاس ریکوزیشن کیا۔ کس نے کہا ہے کہ احتساب نہ کریں۔ چور اور کرپٹ کو نہ پکٹریں۔  مہنگائی کے شکار لوگوں کا مداوا چور چور کہنے سے نہیں ہو گا۔عوام مہنگائی کا رونا روتے دکھائی دیتے ہیں۔ ایوان میں ایک دوسرے کو گالم گلوچ سے عوام کے مسائل حل نہیں ہوں گے۔

مہنگائی،سیاسی انتقام اور میڈیا پر قدغنوں کے خلاف ن لیگ کی تحریک التوا

دوسری جانب ن لیگ نے مہنگائی،سیاسی انتقام اور میڈیا پر قدغنوں کے خلاف قومی اسمبلی میں تحاریک التواءجمع کرادیں،تحریک التوا کے مطابق  ‎نالائق حکمرانوں نے ملک میں غیر منصفانہ اور ظالمانہ ٹیکسوں سے پورا پاکستان بند کر دیا،‎ملک میں مہنگائی، بے روزگاری اور معاشی بدحالی عروج پر ہے جبکہ حکمران سیاسی انتقام میں مصروف ہیں ،التوا ‎جبروتشدد کرانا موجودہ حکومت کی شناخت اور پہچان بن چکی ہے۔

ہاﺅس بزنس ایڈوائزی کمیٹی کا اجلاس

قومی اسمبلی کے اجلاس سے قبل قومی اسمبلی کی ہاﺅس بزنس ایڈوائزی کمیٹی کا اجلاس سپیکر اسد قیصر کی صدارت میں منعقد ہوا ۔ میٹنگ میں موجودہ اجلاس کے ایجنڈا اور طریق کار پر بحث کی گئی۔  میٹنگ میں فیصلہ کیا گیا کہ قومی اسمبلی کے موجودہ اجلاس کوایک دن جاری رکھا جائے گا۔   اجلاس میں وفاقی وزراء پرویز خٹک، شاہ محمود قریشی، شفقت محمود، ڈاکٹر شیریں مہرالنساہ مزاری، علی محمد خان ، ممبران قومی اسمبلی اسد عمر، اسلم بھوتانی نے شرکت کی اقبال محمد علی خان، رانا تنویر ، خرم دستگیر خان، چوہدری حامد حمید ، مرتضٰی جاوید عباسی اور سید غلام مصطفٰی شاہ بھی شریک تھے  ۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer