تاریخ پہ تاریخ،بڑے کیس کا فیصلہ تاحال نہ ہو سکا

تاریخ پہ تاریخ،بڑے کیس کا فیصلہ تاحال نہ ہو سکا


کراچی(24نیوز) سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں نقیب اللہ محسود قتل کیس کی سماعت ہوئی، عدالت نے آئی جی سندھ کو رائو انوار کی گرفتاری کیلئے مزید 3دن کی مہلت دے دی۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں نقیب محسود قتل ازخود نوٹس کیس کی سماعت کی۔ اس موقع پر آئی جی سندھ اللہ ڈنو خواجہ نے عدالت کو بتایا کہ راؤ انوار کی بیرون ملک فرار کی کوشش سے متعلق اسلام آباد اور کراچی ائیر پورٹ کی فوٹیجز حاصل کرلی ہیں۔جو ویڈیوز ہمارے پاس ہیں وہ واضح نہیں۔ مزید فوٹیجز درکار ہیں۔

دوسری جانب آئی جی سندھ نے عدالت سے راؤ انوار کی گرفتاری کے لیے مزید مہلت کی استدعا کی جس پر چیف جسٹس نے حکم دیا کہ پیر 19 مارچ تک رپورٹ جمع کرائیں اور اسی روز نقیب اللہ قتل کیس اسلام آباد میں سنیں گے۔ کیس کی سماعت کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے آئی جی سندھ کا کہنا تھا کہ راؤ انوار جو بھی کر رہے ہیں غلط کر رہے ہیں۔ اب انہیں عدالت میں پیش ہوجانا چاہیے۔ راؤ انوار کے بیرون ملک جانے کے کوئی شواہد نہیں ملے اور اب انہیں خود کو عدالت میں پیش کردینا چاہیے۔

یہ بھی پڑھیں:توہین عدالت کیس: طلال چودھری پر فردِ جرم عائد 

 واضح رہے کہ  مقتول نقیب اللہ کے والد محمد خان نے بھی عدالت کے باہر میڈیا سے بات کی اور کہا کے نقیب پورے پاکستان کا بیٹا تھا اور ہمیں عدلیہ پر مکمل اعتماد ہے۔ مقتول نقیب کے والد نے ڈیل کی باتوں کو سراسر بے بنیاد قرار دیا اور کہا کے کوئی بھی رقم نقیب کے سر کے بال کے برابر بھی نہیں ہے۔ جب تک راؤ انوار گرفتار نہیں ہوتا عدالتوں میں پیش ہوتے رہیں گے۔