رائیونڈ دھماکہ،حساس اداروں کو بڑی کامیابی مل گئی

رائیونڈ دھماکہ،حساس اداروں کو بڑی کامیابی مل گئی


لاہور(24نیوز)حساس اداروں کی بڑی کارروئی ، رائیونڈ دھماکہ میں ملوث دہشت گرد  قانون کے  ہتھے چڑھ گئے۔

بدھ کے روز دہشت گردوں نے لاہور کو پھر خاک و خون میں نہلا دیا،  رائیونڈ  خود کش دھماکے نے کئی گھر اجاڑ دئیے،دھواں، لاشیں،جان بچانے والوں کی بھگدڑ، زخمیوں کے کراہنے کی آوازیں، یہ سب کس طرح بند ہوگا، بے گناہ لوگوں کے خون سے ہولی کب تک کھیلی جائے گی۔ دھماکہ میں 29 افراد زخمی ہوئے جو کہ مختلف اسپتالوں میں زیر علاج ہیں، صوبائی وزیر خواجہ عمران نذیر کا کہنا ہے کہ زخمیوں کو ہر قسم کی طبی سہولیات فراہم کی جارہی ہیں، خواجہ سلمان رفیق، لارڈمئیرلاہورکرنل ریٹائرڈ مبشرجاوید، آئی جی پنجاب عارف نواز، سی سی پی اولاہورامین وینس نے زخمیوں کی عیادت کی۔صدر، وزیر اعظم سمیت دیگر سیاسی رہنماﺅں نے واقعے کی سخت الفاط میں مذمت کی ہے، یہ بھی کہا ہے کہ آخری دہشت گردکی بزدلانہ کارروائیاں قوم کے دہشت گردی کے خلاف عزم کو متزلزل نہیں کرسکتیں۔

یہ بھی پڑھیں: رائیونڈ خود کش حملے کے5 شہداءکی نماز جنازہ ادا کردی گئی

ذرائع کے مطابق حساس ادارے نے بڑی کارروائی کرتے ہوئے لاہور سے رائے ونڈ خودکش حملہ کے سہولت کار سمیت چار ملزمان کوگرفتار کرلیا، مبینہ خودکش حملہ آور کے چچا اور دیگر تین ملزمان شامل ہیں۔ خودکش حملہ آور کا چچا اور دیگر تین افراد کو حراست میں لیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں: سپر لیگ ، پلے آف،فائنل میچ پر خطرہ منڈلانے لگا

ذرائع کے مطابق خودکش حملہ آور کا حقیقی نام سید نصیب شاہ ہے۔ نصیب شاہ کا کور نام حافظ جواد تھا۔ خودکش حملہ آور شانگلہ سوات کا رہنے والا اور ٹی ٹی پی ، ٹی ٹی ایس سے تعلق تھا۔ خودکش حملہ آور کے چچا سید غازی شاہ ، بیٹے قوی شاہ سے تحقیقات جاری ہیں۔ خودکش حملہ آور لاہور آکر چچا کے پاس ٹہرا تھا۔ نیکٹا کی جانب سے خودکش حملہ آور کے لاہور داخل ہونے کی اطلاع دی گئی تھی۔

پنجاب حکومت کی جانب سے رائے ونڈ خودکش دھماکہ کی تحقیقات کےلیے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم بھی تشکیل دے دی گئی ہے جس میں پولیس اور حساس اداروں کے نمائندے شامل ہیں۔