ماہ رمضان کی آمد،  تمام بینکوں نے زکوٰۃ کا شیڈول جاری کر دیا

ماہ رمضان کی آمد،  تمام بینکوں نے زکوٰۃ کا شیڈول جاری کر دیا


 24نیوز: یکم رمضان کو بینک کے بچت کھاتوں سے زکوٰۃ کی کٹوتی ہو گی، تاہم زیادہ تر کھاتہ داروں نے بینکوں کو زکواۃ کی کٹوتی سے روک دیا۔ سیونگ اکاونٹس سے رقم منتقل کر لی۔

حکومت کی طرف سے ہر سال یکم رمضان المبارک کو بینک کھاتوں سے زکواۃ کی کٹوتی کی جاتی ہے اس سال نصاب 39 ہزار 198 روپے مقرر کیا گیا، بینکوں میں سیونگ اکاونٹس میں موجود اتنی اور اس سے زیادہ رقم پر زکواۃ کی کٹوتی ہو گی۔ گزشتہ سال حکومت کو بینک کھاتوں سے زکواۃ کی کٹوتی سے صرف تقریبا 7 ارب روپے ہی حاصل ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں:پاکستان میں سیاسی صورتحال میں اتار چڑھاؤ، غیر ملکی سرمایہ کاری کم ترین سطح پر پہنچ گئی
 
مرکزی بینک کے مطابق گزشتہ سال مئی میں بنیکوں میں نصاب سے زیادہ رقم والے بچت کھاتوں میں مجموعی طور پر 70 کھرب 68 ارب روپے جمع تھے، اگر اس تمام رقم سے زکواۃ کی کٹوتی ہوتی ہو حکومت کو 170 ارب روپے سے زائد رقم مل سکتی تھی، تاہم زیادہ تر کھاتہ داروں نے بیان حلفی کے ذریعے بینکوں کو زکواۃ کی لازمی کٹوتی سے روک رکھا ہے۔ یا یکم رمضان سے قبل سیونگ اکاونٹس میں موجود رقم ایک دو روز کے لیے کرنٹ اکاونٹ میں ٹرانسفر کرا لی جاتی ہے۔

پڑھنا نہ بھولیں:نواز شریف کا متنازع بیان، اسٹاک ایکس چینج میں شدید مندی
 
دوسری جانب حکومت کے پانچ سال پورے ہونے کو ہیں۔ ٹیکسٹائل صنعتکارو سے کیے گئے وعدے پورے نہ ہوئے، اپٹما کا کہنا ہے کہ وفاقی حکومت نے پنجاب کے ووٹرز کو مایوس کیا، الیکشن میں نون لیگ کو مشکل پیش آئے گی،   آل پاکستان ٹیسکٹائل ملز ایسوسی ایشن کے وفد نے وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل اور اسپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق سے ملاقات کی۔ اپٹما وفد نے کہا کہ پنجاب میں ٹیکسٹائل صنعت کے لیے دس گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ شروع کردی گئی ہے۔

یہ خبر ضرور پڑھیں:قیمتوں میں اضافے کے باوجود گاڑیوں کی خریداری بڑھ گئی
 
 حکومت نے پانچ سال کے دوران جو وعدے کیے تھے وہ پورے کرکے جائے۔اپٹما کےگروپ لیڈرگوہر اعجاز نے کہا کہ حکومت کی پانچ سالہ پالیسیاں غلط تھیں۔ وزیراعظم ایکسپورٹ پیکج پرعمل درآمد نہیں ہورہا۔اپٹما وفد نے مطالبہ کیا کہ پنجاب میں ٹیکسٹائل صنعتوں کو بجلی اور گیس سستی کی جائے۔ وزیرخزانہ مفتاح اسماعیل نے اپٹماوفد کو یقین دہانی کرائی کہ ان کے مطالبات وزیر اعظم تک پہنچائے جائیں گے۔