بلوچستان میں پنجابیوں کے قتل میں سرحد پار عناصر ملوث ہیں: احسن اقبال

 بلوچستان میں پنجابیوں کے قتل میں سرحد پار عناصر ملوث ہیں: احسن اقبال


لاہور(24نیوز): وزیرداخلہ کو یوآئی ٹی میں پی ایچ ڈی کی اعزازی ڈگری دے دی گئی۔ ڈاکٹراحسن اقبال کہتے ہیں2002ء میں انہیں ایجنسیوں نے اُٹھایا، آنکھوں پر وہی سیاہ کپڑا ڈالا گیا جو دہشت گردوں کو پکڑنے کے بعد ڈالا جاتا ہے۔

یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کے کانووکیشن پر ڈاکٹر احسن اقبال نے کہا کہ بلوچستان میں پنجابیوں کے قتل میں سرحد پار عناصر ملوث ہیں ۔بھارت پاکستان کے اندرونی حالات کو خراب کرنا چاہتا ہے۔تین سالوں سے دہشت گردی کے واقعات میں تیزی سے کمی آئی ہے۔ احسن اقبال نے بتایا کہ الیکشن کمیشن نے انتخابی فہرستوں پر کام شروع کر دیا ہے۔ آئندہ سال اپریل تک یہ فہرستیں مکمل ہو جائیں گی۔ اُن کا کہنا تھا کہ عمران خان سینیٹ کے انتخابات میں شکست کے خوف سے عام انتخابات قبل از وقت کرانے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ الیکشن کمیشن کی جانب سے انتخابی فہرستوں کو مکمل کرائے بغیر الیکشن کرانا غیر آئینی ہوگا۔ اُنہوں نے کہا کہ عمران خان چاہتے ہیں کہ نگران حکومت کا سیٹ اپ بنے، پختونخوا میں پی ٹی آئی کی جماعت میں بغاوت شروع ہوچکی ہے جس سے عمران خان بچنا چاہتے ہیں۔

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ عمران خان دو ہزار تیرہ سے ہی انکی حکومت کو ایک مہینے کے پرمٹ پر چلا رہے ہیں ۔ اُن کے دعووں کے ساتھ ہی وہ اپنی حکومتی مدت مکمل کر لیں گے۔ اُنہوں نے کہا کہ نواز شریف کو نااہل کرنے کے عدالتی فیصلے پر تحفظات ہیں۔ پیپلز پارٹی بھی آج تک بھٹو کی پھانسی کے عدالتی فیصلے کو قبول نہیں کرتی۔ احسن اقبال نے کہا کہ عمران خان کے پاس یونین کونسل چلانے کا تجربہ نہیں وہ بیس کروڑ کی آبادی کے ملک کو چلانے کی خواہش رکھتے ہیں۔