چین نے سی پیک کے متعلق امریکی الزامات مسترد کر دیے

چین نے سی پیک کے متعلق امریکی الزامات مسترد کر دیے


(24 نیوز) چین نے امریکا کو خبردار کیا ہے کہ آئی ایم ایف قرض سے پاک چین تعلقات پر کچھ فرق نہیں پڑے گا، سی پیک قرضے معاشی بحران کی وجہ نہیں، چین آئی ایم ایف میں بھی پاکستان کی مدد کرے گا۔

چینی دفتر خارجہ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ امریکا کی طرف سے سی پیک کو پاکستان کی معاشی خرابی کا ذمہ دار قرار دینا غلط ہے، سی پیک دو حکومتوں کے درمیان طے پانے والا تجارتی معاہدہ ہے جس میں شامل تمام منصوبے اور مالی معاملات دونوں ممالک نے باہمی رضامندی سے طے کیے گئے ہیں، چین سی پیک منصوبوں کی توسیع اور پاکستانی وسائل کی بنیاد پر ترقی کا خواہاں ہے۔یاد رہےکہ  امریکہ کے محکمہ خارجہ کی ترجمان نے گزشتہ ہفتے پاکستان کی اقتصادی مشکلات کی ایک وجہ چینی قرض کو قرار دیا تھا۔

ذرائع کے مطابق سی پیک کے تحت اب تک 9 منصوبے مکمل ہو چکے ہیں جبکہ 13 منصوبے زیر تعمیر ہیں، ان منصوبوں پر مجموعی سرمایہ کاری کی مالیت 19 ارب ڈالر ہے، اس میں سے صرف 4 ارب ڈالر آسان ترقیاتی قرضوں کی صورت میں دیئے گئےہیں اور  ان پر سود کی شرح 2 فیصد اور واپسی کا عرصہ 30 سال تک ہے۔ چینی وزارت خارجہ کے مطابق سی پیک کی بدولت پاکستان کی جی ڈی پی میں ایک سے دو فیصد اضافہ ہوا ہے، جبکہ اب تک روزگار کے 70 ہزار نئے مواقع فراہم ہوئے۔