اسرائیل نے ظلم کی انتہا کردی

اسرائیل نے ظلم کی انتہا کردی


24نیوز: اسرائیلی سیکیورٹی فورسز نے دو ہزار سے اب تک فلسطین میں 15 سو فلسطینی بچے اور بچیاں شہید کردی ہیں ۔

ضرور پڑھیں:ڈالر سستا ہوگیا

 اسرائیلی فوج نے ظلم کی ساری حدیں پارکردیں۔ 19سالوں میں ڈیڑھ ہزاربچوں کوقتل کرڈالا۔ دوہزار سے اب تک فلسطین میں15سومعصوم فلسطینی بچوں کو شہید کیا جاچکا ہےجبکہ 10 ہزار فلسطینی بچوں کوگرفتارکیاگیا جن میں سے 1200 بچےابھی تک اسرائیل کی مختلف جیلوں میں قید ہیں۔رپورٹ کےمطابق سیکیورٹی فورسز کی فائرنگ سے 600 بچے زخمی ہوئے۔جن میں سے کئی بچے زندگی بھرکےلیے معذورہوچکے ہیں۔

گزشتہ روز پندرہ سالہ محمد تمیمی کو اسرائیلی فورسز نے گرفتار کیا۔محمد تمیمی پر شدید تشدد کیا گیا۔محمد تمیمی ،احد تمیمی کے کزن ہیں۔احدتمیمی وہ بہادرلڑکی تھی جس نے اسرائیلی فوجی کو تھپڑ رسید کرکے عالمی شہرت حاصل کی تھی۔30مارچ 2018کے بعد اب تک 300کے قریب فلسطینی شہری اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے شہید ہوچکے ہیں۔اسرائیلی قیدخانوں میں قید ہزاروں فلسطینیوں میں خواتین بھی قید ہیں۔ان میں سے 46 خواتین 'دامون' نامی ایک بدنام زمانہ حراستی مرکز میں قید ہیں۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔