ملکہ پربت کی 56فٹ بلند چوٹی پرپاکستانی پرچم لہرانے والا نوجوان

ملکہ پربت کی 56فٹ بلند چوٹی پرپاکستانی پرچم لہرانے والا نوجوان


  24نیوز : وادی کاغان کی دشوار گزار اور بلند ترین چوٹی ملکہ پر بت جس پر پریوں اور جنات کا بسیرا بتایا جاتا اس چوٹی پر پہنچ کر قومی پرچم لہرانے والے پہلے فوجی جوان نے اس چوٹی کو سرکیا۔

 راستہ انتہائی دشوار گزار اور کٹھن تھا دوسرا جھیل سیف الملوک کی کہانیوں کی وجہ سے پریوں اور جنات کے بسیرے کی باتیں بہت تھیں۔

17ہزار تین 56فٹ کی بلند پر واقع ملکہ پربت کی چوٹی کی طرف سفر کرنے والے اس بہادر فوجی کا تعلق پنجاب رجمنٹ سیالکوٹ سے ہے نائیک ظاہر ضیاء کے مطابق 27جولائی کو لاہور سے پاکستان کوہ پیما کی تیرہ رکنی ٹیم کے ساتھ سفر شروع کیا پہلا پڑ وادی کاغان کی ڈاڈر ویلی میں کیا۔

بیس کیمپ کی طرف نکلے تو پھر شدید زالہ باری نے انکا راستہ روک لیا جیسے جیسے پتھریلے راستے شروع ہوے زندگی ختم ہوتی نظر آئی چٹا گلیشیر کے مقام پر ہمارے دو ساتھی موسم کی تلخیاں برداشت نہ کرسکے اور دریا میں گرنے سے زخمی ہوگئے ان دونوں ساتھیوں کے مطابق انہیں کچھ آوازیں سنائی دیتی تھیںوادی کاغان کی بلند ترین چوٹی پر آٹھ دن کے پیدل سفر سے پہنچے اتنا ہی دشوار راستہ واپسی کا بھی تھا ۔

میراخوب تھا کا میں پاک آرامی کا اعزاز بنو میری والدہ میرے لیے بہت دعائیں کرتی رہی جب بیٹا چوٹی سر کرکے گھر آیا تو بہت خوشی ہوئی کہ وہ ملک اعزاز بن گیا۔ملکہ بربت کی چوٹی پر قومی پرچم لہرانے کے بعد ظاہر ضیاء کی یہ ہی خواہش ہے کہ وہ اب مونٹ ایورسٹ پر پاک وطن اور آرامی کا جھنڈا لہراے گا۔

شازیہ بشیر

Content Writer