زینب کے والدین نے مجرم کی سرعام پھانسی کا مطالبہ کردیا


قصور (24نیوز) معصوم زینب کی والدہ ' والد امین انصاری نے سفاک درندے عمران علی کو چار بار سزائے موت ملنے کے بعد سرعام پھانسی دینے کا مطالبہ کر دیا ہے۔
تفصیلات کے مطابق انسداد دہشت گردی کی عدالت کی جانب سے فیصلہ سنائے جانے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے زینب کی والدہ نے کہا کہ عدالت کی جانب سے جو بھی سزا ملی ہے، بس ٹھیک ہے لیکن ہمارا مطالبہ یہی ہے کہ اسے سرعام پھانسی دی جائے تاکہ وہ دوسروں کیلئے عبرت کا نشان بن سکے۔
اسی طرح والد امین انصاری نے انتہائی غم کی کیفیت میں فیصلے پر اطمنان کا اظہار کیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اپنی بیٹی کے قاتل کی سزا پر مطمئن ہوں تاہم اسے سرعام پھانسی دی جانی چاہیے تھی۔انہوں نے کہا کہ آج زینب بہت شدت سے یاد آرہی ہے،کاش وہ ہمارے ساتھ ہوتی۔
واضح رہے کہ انسداد دہشت گردی کی عدالت نے ملزم عمران کوزینب کو اغوا کرنے، زیادتی کرنے اور قتل کرنے پر چار مرتبہ سزائے موت کا حکم سنا دیااور دفعہ 780 کے تحت بدفعلی پر سزائے موت اور 10 لاکھ روپے جرمانہ کی سزا سنائی ہے،جبکہ لاش کو گندگی میں چھپانے پر 7 سال قید اور 10 لاکھ روپے جرمانہ کی سزاسنا ئی ہے۔ملزم عمران نے گزشتہ ماہ معصوم زینب کو بد فعلی کے بعد قتل کردیا تھا۔ زینب سپارہ پڑھنے جا رہی تھی کہ ملزم عمران اسے اپنے ساتھ لے گیا تھا جبکہ زینب کے والدین عمرہ کی ادائیگی کے لیے سعودی عرب گئے ہوئے تھے۔