نواز شریف،مریم نواز پاکستان نہیں آئینگے


لندن(24نیوز)سابق وزیر اعظم نواز شریف کی اہلیہ بیگم کلثوم نواز کی تشویشناک حالت کے باعث سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز نے وطن واپسی موخر کر دی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ کلثوم نواز کی حالت بدستور تشویشناک ہے جس کے باعث ڈاکٹرز نے انہیں لائف سپورٹ مشین سے نہ ہٹانےکا فیصلہ کیا ہے، نواز شریف، حسین اور مریم نواز نے بھی ڈاکٹرز سے 2 گھنٹے طویل ملاقات کی جس میں ڈاکٹرز نے شریف فیملی کو بتایا کہ کلثوم نواز کی طبیعتت کو مانیٹر کیا جا رہا ہے تاہم حالت میں بہتری کے حوالے سے کوئی ٹائم فریم نہیں دیا جا سکتا۔

ڈاکٹرز نے نواز شریف کو اہلیہ کے ساتھ زیادہ وقت گزارنے کا مشورہ دیا ہے۔ذرائع کا بتانا ہے کہ نواز شریف اور مریم کو 19 جون کو عدالت میں پیش ہونا تھا اور دونوں نے آج پاکستان واپسی کے ٹکٹ بھی کروا رکھے تھے لیکن ڈاکٹرز کے مشورے کے بعد نواز شریف اور مریم نواز نے فی الحال وطن واپسی موخر کر دی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  چودھری نثار نے عمران خان سے ہاتھ ملا لیا،اتحاد کا فیصلہ

ذرائع کا کہنا ہے کہ نواز شریف اور مریم نواز کی وطن واپسی بیگم کلثوم نواز کی صحت سے مشروط ہے، نواز شریف اور مریم نواز 19 جون کو احتساب عدالت میں پیش نہیں ہوں گے اور دونوں کے وکلا حاضری سے استثنیٰ کی درخواست دیں گے، کلثوم نواز کی میڈیکل رپورٹ اور ڈاکٹر کا خط بھی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست کے ساتھ احتساب عدالت میں جمع کرایا جائے گا۔

سابق وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ کلثوم نواز بدستور وینٹی لیٹر پر ہیں ان کو دعاﺅں کی ضرورت ہے قوم دعا کرے،نواز شریف اور مریم نواز نے ہارلے سٹریٹ کلینک میں کلثوم نواز کی عیادت کی۔