سیاسی پارٹیوں میں خواتین کو کس بنیاد پر عہدے دیئے جاتے ہیں؟ ریحام خان نے بتا دیا


 عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان نے غیرملکی میڈٰیا کوانٹرویو میں انکشاف کیا ہے کہ پاکستانی خواتین سیاستدانوں کو جنسی ہراسگی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

ریحام خان نے غیرملکی میڈٰیا کوانٹرویو میں کہا کہ اسی بنا پر پارٹی عہدے دیئے جاتے ہیں۔  کئی خواتین سیاستدانوں کو اسی لیے سیاست سے الگ ہونا پڑتا ہے۔ ریحام خان نے کہا کہ ان کی کتاب ان کی زندگی کی کہانی ہے۔

 جس میں ان کی شادیوں کے تجربات بھی شامل ہیں۔ ریحام خان نے کہا کہ انہوں نے کبھی تحریک انصاف کی سیاست میں حصہ نہیں لیا۔ وہی کیا جو دنیا بھر میں سیاستدانوں کی بیگمات کرتی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:لودھراں میں عائشہ گلا لئی پر انڈوں کی بارش
 
واضح رہے کہ  اس سے قبل ریحام خان نے بھارتی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا تھا کہ عمران خان نے  تیسری شادی کررکھی ہے جسے وہ چھپا رہے ہیں۔ ان کے ذرائع عمران خان کی تیسری شادی کی تصدیق کررہے ہیں۔ مگر خود اس کا اعلان نہیں کررہے۔ جھوٹ بولنے کے باوجود نہ جانے انہیں سپریم کورٹ نے کس طرح صادق اور امین قرار دیا۔

پڑھنا نا بھولیں:پاکستان کی تمام سیاسی جماعتیں غیر رجسٹر، ایف بی آر کا انکشاف

ایک اور انٹرویو  میں   ریحام خان نے عمران خان سے علیحدگی کی وجہ  بتاتے ہوئے کہا میرے اور بچوں کے خلاف جھوٹ نا قابل برداشت اور عمران خان کے مشن میں رکاوٹ تھے۔ باعزت طور پر الگ ہو گئی۔

دوسری جانب عمران خان کی بہنیں بھی شروع دن سے ریحام خان سے شادی پر ان سے ناراض تھیں اور احتجاجاً شادی میں بھی شرکت نہیں کی ۔پارٹی کے کئی رہنما بھی ریحام کی سیاسی سرگرمیو ں پرنا خوش تھے۔