سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد نہ روکنے پر اسلام آباد ہائیکورٹ برہم

سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد نہ روکنے پر اسلام آباد ہائیکورٹ برہم

اسلام آباد (24نیوز) سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کی تشہیر کا معاملہ تحفظ ناموس رسالت کے معاملے پر خاطر خواہ اقدامات نہ کرنے پر عدالت برہم جسٹس شوکت عزیز صدیقی کہتے ہیں ختم نبوت کے معاملے پر وزیراعظم کو بھی عدالت بلانا پڑا تو بلاوں گا۔


تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کی تشہیر کا معاملہ تحفظ ناموس رسالت کے معاملے پر خاطر خواہ اقدامات نہ کرنے پر عدالت برہم ختم نبوت کے معاملے پر وزیراعظم کو بھی عدالت بلانا پڑا تو بلاوں گا۔

جسٹس شوکت عزیزصدیقی کیس کی سماعت جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے کی وزرات داخلہ کے اسپیشل سکرٹری عدالت میں پیش اسپیشل سکرٹری داخلہ کا کہنا تھا وزارت مذہبی امور کی جانب سے ایک اعلی سطحی کمیٹی تشکیل دی گئی گستاخانہ مواد کے حوالے سے ایک سمری بھی تیار کر رہے ہیں جو جلد وزیراعظم کو پیش کی جائے گی جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس دیئے کےعدالت کو سخت رویہ اختیار کرنے پر مجبور نہ کیا جائےگستاخانہ مواد کی تشہیر کے خلاف عدالت کے فصیلے پر مکمل عمل دارآمد نہیں کیا گیاآئندہ سماعت پر عدالت کو مطمئن نہ کیا گیا تو تمام ذامدار افسران کو توہین عدالت کو نوٹس جاری ہوں گےجو مجرم ملک سے فرار ہیں ان کی واپسی کے لیے وزارت داخلہ نے کیا اقدامات کیےلگتا ہے حکومت پر بین الاقوامی دباؤ آنا شروع ہو گیا ہے.

وزارت داخلہ بلاگرز کی روک تھام کے لیے حساس اداروں کی خدمات حاصل کر ےآئندہ سماعت میں سکرٹری داخلہ جامع رپورٹ پیش کریں حکومت تحفظ ناموس رسالت کے معاملے پر مستقل حل نکالےسماعت 11 دسمبر تک ملتوی۔