عمران خان کا رُکن قومی اسمبلی داور کُنڈی کو پارٹی سے نکالنے کا فیصلہ


خیبر پختونخواہ (24نیوز): ڈی آئی خان میں لڑکی کو بے لباس کر کے گھمانے کے واقعے نے پی ٹی آئی میں پھوٹ ڈال دی۔ صوبائی وزیرعلی امین گنڈاپور پر الزام لگانے والے رُکن قومی اسمبلی داور کُنڈی کو عمران خان نے پارٹی سے نکالنے کا فیصلہ سُنا دیا۔

تفصیلات کے مطابق ڈی آئی خان میں لڑکی کو بے لباس کرکے پھرایا گیا ۔ جو خود ایک سانحہ ہے مگر اس سے بڑا سانحہ یہ ہوا کہ لباس تار تار کر کے گلیوں میں پھرائی جانے والی لڑکی کے واقعے کو سیا ست کے حمام لے آیا گیا۔  اور لائے بھی وہ جو نئے پاکستان کے داعی ہیں۔اس واقعے کے ملزمان کی پُشت بناہی کا الزام خیبر پختونخواہ کے وزیرعلی امین گنڈاپور پر لگا۔  اور الزام لگانے والا کوئی اور نہیں گھر کے بھیدی تھا۔ یعنی داوڑ کُنڈی تحریک انصاف کا رُکن قومی اسمبلی ، گواہی گھر کی ہو تو لوگ یقین کرنے لگتے۔تحریک انصاف مظلوم لڑکی کو انصاف دلانے سے پہلے پارٹی بن گئی۔

خیبر پختونخواہ کے وزیرعلی امین گنڈا پور پر سانحہ ڈی آئی خان کے مُلزمان کی سرپرستی کا انکشاف کرنے والے تحریک انصاف کے رُکن اسمبلی داور کُندی کو نکالنے کا فیصلہ کرلیا گیا۔

 اُنکلیاں اںصافیوں پر اُٹھنے لگی، امین گنڈاپور عمران خان کے قریبی ہیں۔ اس سے پہلے جب ان کی گاڑی سے میڈیا کے سامنے نکلنے والی شراب کی بوتل کو شہید کی بوتل کہا گیا تھا تب بھی عمران خان کی حمایت امین گنڈاپور کو حاصل رہی ۔ اب ایک بار پھر امین گنڈاپور پر الزام لگانے والا پارٹی سے باہر کر دیا گیا۔ سچ کس طرف ہے۔ یہ فیصلہ مظلوم لڑکی کا خاندان کرے گا۔ مگر کیا تحریک اںصاف اسے یہ موقع دے گی؟

مزید دیکھئے: