سندھ ایک بار پھر سب پر بازی لے گیا


کراچی( 24نیوز ) وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے صوبے کے لئے اگلے 9 ماہ کا بجٹ پیش کردیا، وزیر اعلیٰ کا کہنا ہے کہ رو اں ما لی سال وفاق کی جانب سے رقم میں کٹوتی کے باعث ترقیاتی اخراجات میں کٹوتی کی گئی ہے، صوبے میں صاف پانی کی کمی کو پورا کرنے کے لئے اقدامات کئے جارہے ہیں۔

آئندہ بجٹ میں فلٹریشن پلانٹس ، ریورس اسموسز پلانٹس پر توجہ مرکوز کی جائے گی،وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے صوبے کے اگلے نو ماہ لئے بجٹ پیش کردیا، سندھ اسمبلی میں تقریر سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ کا کہنا ہے کہ رواں سال کے لئے کل ریوینیو اخراجات 773.3 ارب رو پے ہیں،تر قیا تی مد میں 63.0 ارب رو پے کے اختیار دیے جا چکے ہیں۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ روا ں ما لی سال 2018-19میں تر قیا تی مصا ر ف کیلئے کل بجٹ 343.911 ارب روپے ہے،وزیر اعلیٰ نے بتایا کہ 252 ارب روپے صوبائی سالانہ ترقیاتی اسکیموں کا تخمینہ اور 30.00ارب رو پے ضلعی سکیمو ں کیلئے لگایا گیا ہے۔ مراد علی شاہ نے کہا کہ 2226 جاری اسکیموں کے لئے صو با ئی اے ڈی پی 202.00 ارب رو پے پر مشتمل ہے۔ جبکہ نئی اسکیمو ں کیلئے 50.00 ارب رو پے کا تخمینہ لگا یا گیا ہے۔

وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ترقیاتی کاموں کے لئے محکموں کو 24.00 ارب رو پے کی کٹو تی کا بھی سا منا ہے۔ وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ ترقیاتی بجٹ میں تخفیف کا فیصلہ اس لئے کیا گیا کیونکہ صوبے کو وفاقی منتقلیوں میں کمی کا سامنا ہے، سندھ میں کم با رشو ں کے با عث مختلف اضلا ع جن میں تھر پارکر ،عمر کو ٹ ، سانگھڑ، قمبر شہدا د کو ٹ اور دا دو میں قحط جیسی صو ر تحا ل کا سامنا ہے، قحط زدہ علاقوں میں تین ماہ کے لئے مفت گندم فرا ہم کی گئی ہے۔ قحط سے متا ثرہ علا قو ں میں محکمہ صحت کی سہو لیات کی فرا ہمی کیلئے مرا کز صحت ،مو با ئل مرا کز اور ایمر جنسی مرا کز قا ئم کئے جائیں گے۔

وزیر اعلیٰ نے کہا کہ پینے کا صاف پانی اور نکاسی آب ہر شہری کا بنیادی حق ہے، آئندہ بجٹ میں فلٹریشن پلانٹس ، ریورس اسموسز پلانٹس اور ڈی سی لینیشن پلانٹ لگانے پر توجہ مرکوز کی جائے گی۔ جس میں تقریبا 300ایم جی ڈی پینے کا پانی فراہم کرنے کی گنجائش ہوگی۔

یاد رہے موجودہ دور حکومت میں سندھ حکومت نے سب سے پہلے بجٹ پیش کردیا ہے،وفاق اور بقیہ صوبوں نے ابھی تک اپنے بجٹ نہیں پیش کیے۔